مخالفین کو اس حد تک نہیں گرنا چاہیئے، بشریٰ بی بی پر تنقید پر وزیراعظم دلبرداشتہ

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) وزیراعظم عمران خان اور ڈیجیٹل میڈیا سے تعلق رکھنے والے نوجوانوں اور پاکستان کے بڑے ڈیجیٹل پلیٹ فارمز کے درمیان ایک ملاقات کا انعقاد کیا گیا۔اس دوران وزیراعظم عمران خان نے کئی پہلوؤں پر کھل کر گفتگو کی اور یہ بھی بتایا کہ پاکستان کی ترقی اور معاشرے کی اصلاح کے لیے ڈیجیٹل پلیٹ فارمز کیا کردار اد ا کر

سکتے ہیں۔انہوں نے سوشل میڈیا پر ہونے والے ذاتی حملوں پر ردعمل دیتے ہوئے اپنی اہلیہ بشریٰ بی بی کا ذکر بھی کیا۔وزیراعظم نے کہا کہ سوشل میڈیا کو کبھی یہ اجازت نہ دی جائے کہ وہ آپکے اہلخانہ پر ذاتی حملے کریں کیونکہ یہ ہماری روایات میں شامل نہیں ہے۔وزیراعظم نے مزید کہا کہ جس طرح سے بشریٰ بی بی کو اٹیک کیا گیا اس کی مثال نہیں ملتی۔حالانکہ نہ تو ان کا سیاست میں کوئی کردار تھا اور نہ ہی وہ کوئی عوامی شخصیت ہیں۔مریم نواز تو ایک سیاسی شخصیت ہیں وہ سوشل میڈیا سیل چلاتی ہیں،وہ خود بیان دیتی ہیں اور سیاست میں کردار ادا کرتی ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ہماری جماعت نے کبھی کلثوم نوازکا نام نہیں لیا، اور نہ ہی لینا چاہئیے کیونکہ یہ تہذیب کے خلاف ہے۔لیکن یہ لوگ بہت نچلی سطح پر چلے جاتے ہیں لہذا ان کو اس چیز کی بلکل اجازت نہ دی جائے۔ یہ لوگ اتنا گرجاتے ہیں ان کو بخشنا نہیں چاہیے۔انہوں نے راناثناءاللہ پر تنقید کرتے ہوئے کہا ان کے اپنے لوگ کہتے ہیں رانا ثناء اللہ قاتل ہیں۔ وزیراعظم نے مزید کہا کہ پاکستان استحکام کی جانب گامزن ہے۔ روپے کی قدر مزید گر سکتی تھی لیکن بڑی مشکل سے حالات کو کنٹرول کیا۔انہوں نے کہا کہ ہماری کامیابی کا مطلب مافیاز کی موت ہے، ان کی صرف ناکامی نہیں ہوگی بلکہ یہ جیلوں میں جائیں گے۔

 



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


تازہ ترین خبریں
23سالہ رفاقت کا اختتام
ترک صدر کے دورے کے دوران آرمی چیف اور عمران خان اکٹھے نظر کیوں نہ آئے، جانیں
اردوان پاکستان میں الیکشن لڑیں تو جیت جائیں گے۔وزیراعظم عمران خان نے کیا بیان دیدیا
میں کرپٹ نہیں، جو کرپشن کرتے ہیں فوج کا ڈر انہیں ہوتا ہے: وزیراعظم
ترک صدر کے ساتھ ترکی سرمایہ کار بھی صدر کے ساتھ ہیں
کشمیر ترکی کیلئے ایسا ہی ہے جیسا پاکستان کیلئے ، ترک صدر کا پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے اہم خطا ب

تازہ ترین ویڈیو
عمران خان کا سعودی ٹی وی کو انٹریو ، انہوںنے دنوں ملکوں بارے کیا کچھ کہا
جنرل راحیل کی دھمکی پر بھارتی پاگل ہوگئے،دیکھیں پاکستانی تجزیہ نگار نے بھی بھارتی کی چھترول کردی
پاکستان مخالف تقریر کرنے پر پاکستانی نوجوان نے لندن ائیرپورٹ پر محمود خان اچکزئی کو گالیاں اور اور ہاتھا پائی
اگر ایاز صادق کے دل میں کھوٹ نہیں تھا تو پھر وہ عمران خان کا سامنا کرنے سے کیوں بھاگے، ایاز صادق غیر جانبدارنہیں رہے۔ سنیے
مجھ سے ذاتی دشمنی نکالی جارہی ہے ۔۔۔، افسوس کہ وزیراعظم صاحب پوری بات سنے بغیر ہی اٹھ کر جارہے ہیں

Copyright © 2019 pakistanlivenews.com. All Rights Reserved