پست ذہنیت شخص نے غوطہ خوروں کو ڈوبتی بیٹی کو بچانے سے روک دیا


دبئی (مانیٹرنگ ڈیسک) ایک پست ذہنیت شخص نے پانی میں ڈوبنے والی بچی کو موت کے سپرد کردیا لیکن ریسکیو اہلکاروں کو اسے ہاتھ لگانے کی اجازت نہیں دی۔ دُبئی پولیس کے ریسرچ اینڈ ریسکیو ڈیپارٹمنٹ کے ڈپٹی ڈائریکٹر لیفٹیننٹ کرنل احمد برقیبہ نے ایک خلیجی اخبار ایمریٹس 24/7 کو بتایا ہےکہ کچھ سال پہلے ایک ایشیائی باشندہ اپنے گھرانے کے

ہمراہ ساحل سمندر پر تفریح منا رہا تھا۔
اچانک اس کی 20 سالہ بیٹی گہرے پانی میں چلی گئی اور مدد کے لیے چیخ و پکار کرنے لگی۔اس کی زندگی خطرے میں دیکھ کر قریب ہی موجود دو ریسکیو غوطہ خور اس کی جانب بھاگے۔ مگر جب وہ لڑکی سے چند میٹر دُور تھے تو اس کا والد ان کے راستے میں آ گیا۔ یہ ایشیائی شخص لمبے قد اور مضبوط جسامت کا مالک تھا۔ جس نے ان غوطہ خوروں کو اپنی گرفت میں لے لیا اور بیٹی کے قریب جانے روک دیا۔ جب غوطہ خوروں نے اسے کہا کہ تمہاری بیٹی مر جائے گی، اسے بچانے دو تو یہ بیمار ذہنیت والا شخص کہنے لگا ، میری بیٹی مرتی ہے تو مر جائے، مگر میں تم نامحرموں کو اسے چھونے کی اجازت بالکل نہیں دے سکتا۔تھوڑی دیر بعد ہی اس شخص کی بیٹی درجنوں لوگوں کے سامنے سمندر کی لہروں میں غرق ہو گئی



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us