اب ہم اس عرب ملک کیساتھ تعلقات استوارکرنیوالے ہیں ،متحدہ عرب امارات کے بعد اب کس عرب ملک کانمبرلگ گیا،اسرائیلی میڈیانے بتادیا


یروشلم (ویب ڈیسک )اب ہم اس عرب ملک کیساتھ تعلقات استوارکرنیوالے ہیں ،متحدہ عرب امارات کے بعد اب کس عرب ملک کانمبرلگ گیا،اسرائیلی میڈیانے بتادیا،یواے ای کے بعد کیا مراکش اور اسرائیل کے درمیان تعلقات بحال ہونگے؟متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے درمیان امن معاہدے کے بعد مراکش کے بھی اسرائیل کے ساتھ تعلقات معمول پر آنے والے ہیں، اسرائیل نے ایک رپورٹ میں دعویٰ کردیا ہے، اسرائیلی رپورٹ کے مطابق مراکش نے

کہا کہ اسرائیل کے ساتھ تعلقات معمول پر لانے کے لئے عرب ریاستوں کی ایک اور ریاست میں سے ایک ہے۔اسرائیلی اخبار “ٹائمز آف اسرائیل ” کی جمعہ کو شائع ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق ، متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے مابین تعلقات قائم کرنے کے معاہدے کے بعد اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات معمول پر لانے والی مراکش اگلی عرب ریاستوں میں سے ایک ہونے کا امکان ہے۔کان عوامی نشریاتی ادارے نے نامعلوم امریکی اہلکاروں کے حوالے سے کہا ہے کہ مراکش کو ایک امیدوار کے طور پر دیکھا جاتا ہے کیونکہ مراکش کے پہلے ہی اسرائیل کے ساتھ سیاحتی اور تجارتی تعلقات ہیں۔ اس رپورٹ میں شمالی افریقہ کے ملک کو اپنی چھوٹی یہودی برادری کے تحفظ کا بھی حوالہ دیا گیا ہے۔مراکش نے 1975 میں مغربی صحارا کے بڑے حصوں پر قبضہ کیا تھا کیونکہ اسپین اس علاقے سے دستبردار ہوا تھا جس کے بعد اس اقدام کے تحت ان علاقوں کو اپنے ساتھ منسلک کردیا تھا جس کو بین الاقوامی سطح پر تسلیم نہیں کیا گیا تھا۔فروری میں چینل 13 کی ایک خبر میں انکشاف کیا گیا تھا کہ اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو نے اس طرح کے تین طرفہ معاہدے کی کوشش کی اور اس معاہدے کو فروغ دینے کے لئے واشنگٹن سے تبادلہ خیال کیا ، لیکن ٹرمپ انتظامیہ نے فی الحال کوئی جواب نہیں دیا،مراکش کو امریکاکا اتحادی سمجھا جاتا ہے، اور وہ طویل عرصے سے اسرائیل کے ساتھ غیر رسمی لیکن قریبی انٹیلی جنس تعلقات کو برقرار رکھے ہوئے ہے۔اگرچہ ان ممالک کے باضابطہ تعلقات نہیں ہیں ، لیکن مراکش نے اسرائیلی رہنماؤں کی میزبانی کی ہے ، اور اسرائیلیوں کو وہاں جانے کی اجازت ہے، مراکش میں تقریباً3،000 یہودی آباد ہیں جو 1948 میں اسرائیل کی تشکیل سے پہلے کی تعداد کا ایک حصہ تھا ، لیکن پھر بھی یہ عرب دنیا کی سب سے بڑی جماعت ہے۔مراکش کے علاوہ بحرین اور عمان بھی اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کرنے میں متحدہ عرب امارات کی پیروی کرسکتے ہیں۔ دونوں ممالک اسرائیل یواے ای معاہدے کا خیرمقدم کیا ہے۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us