سورج گرہن کیوں ہوتا ہے، کن چیزوں سےاس دوران گریز کرنا چاہیے،جانیں


اسلام آباد(ویب ڈیسک) سورج گرہن اُس وقت وقوع پذیر ہوتا ہے جب چاند اپنے مدار میں گردش کے دوران سورج اور زمین کے درمیان میں آجاتا ہے، جس کے بعد زمین سے سورج کا کچھ یا پھر پورا حصہ نظر نہیں آتا۔سورج گرہن کے موقع پر لوگوں کو ہمیشہ احتیاط برتنے کے لیے کہا جاتا ہے۔ ماہرین مشورہ دیتے ہیں کہ وہ سورج کو براہِ راست نہ دیکھیں اور

مخصوص چشمے کا استعمال کریں۔بی بی سی کے مطابق ماہرین کا کہنا ہے سورج گرہن کے وقت سورج کو کوئی فلٹر استعمال کیے بغیر نہ دیکھیں،گرہن دیکھنے کے لیے بنائے گئے ایسے چشمے کو استعمال نہ کریں جو تین سال پرانا ہو۔گھر پر بننے والے سولر فلٹر استعمال نہ کریں۔بغیر فلٹر کے کیمرے استعمال نہ کریں۔گرہن دیکھنے کے لیے دھوپ کی عینک کا استعمال ہرگز نہ کریں۔ماہرین کے مطابق ٹیلی سکوپ جس میں فلٹر لگا ہو وہ بھی استعمال نہیں کی جانی چاہیے کیونکہ فلٹر میں اگر باریک سے باریک سوراخ بھی ہو تو اس سے بھی لمحوں کے اندر انسانی آنکھ کا ریٹینا ہمیشہ کے لیے تباہ ہوسکتا ہے۔یونیورسٹی آف کیلیفورنیا کے امراض پر کنٹرول کرنے سے متعلق سینٹر کے مطابق گرہن لگنے کے موقع پر سورج کو براہ راست نہیں دیکھنا چاہیے اس سے نظر پر منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ اس سے آنکھ کی دیکھنے کی صلاحیت مکمل طور پر متاثر ہو سکتی ہے۔ آنکھ میں موجود ریٹینا خراب ہوتا ہے اور کوئی بھی چیز دیکھنے کی صلاحیت پر اثر پڑتا ہے۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us