خودکو ابلیس قرار دینا بہت ہی مہنگاپڑگیا،سعودی نوجوان کیلئے سخت سزا تجویز کردی گئی


جدہ(نیوز ڈیسک) گزشتہ روز ایک سعودی نوجوان کی ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس میں اس نے میک اپ کے ذریعے ابلیس کا رُوپ دھار رکھا تھا۔ اس سعودی نوجوان کا ویڈیو میں کہنا تھا کہ وہ ایک ابلیس ہے اور وہ آہستہ آہستہ جاگ رہا ہے۔ اس ویڈیو کے سامنے آنے پر سعودی عوام میں بہت اشتعال پیدا ہوا تھا، جس کے بعد پولیس بھی حرکت میں آئی اور اس نوجوان کو

گرفتار کر لیا گیا ۔اُردو نیوز کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ خود ساختہ ابلیس کے حوالے سے سعودی لا فیکلٹی کی طالبہ الجوہرة العبدلی کا ٹویٹ ہیش ٹیگ کی شکل اختیار کرگیا ہے۔الجوہرة نے (# ھاشتاق_ القانون) کے عنوان سے ابلیس کو مِلنے والی امکانی سزا کے حوالے سے سوال اُٹھا کر خود ہی اس کا جواب دیا ہے۔ الجوہرہ کا کہنا تھا کہ ابلیس کا رُوپ دھارنے والے اس سعودی نوجوان نے دو خلاف ورزیاں کی ہیں۔سب سے سنگین خلاف ورزی تو مذہب اسلام کا مذاق اُڑانے کی ہے جو انفارمیش کرائمز قانون کی دفعہ 6 کے مطابق قابلِ سزا جُرم ہے۔ اس جُرم پر اُسے پانچ برس تک قید بھُگتنا ہو گی یا پھر 30 لاکھ ریال تک کا بھاری جرمانہ بھُگتنا ہو گا۔ جبکہ اس کی دوسری خلاف ورزی ڈرائیونگ کے دوران اپنی ویڈیو بنانا ہے۔ اس جُرم میں اسے 24 گھنٹے قید اور 300 ریال تک کا جرمانہ ہو سکتا ہے۔ واضح رہے کہ سعودی نوجوان نے خود کو ایک شیطان کا سا رُوپ دے کر اپنی ایک ویڈیو بنائی جس میں وہ اپنے منہ سے خود کو ابلیس بتا رہا تھا۔ ابلیس ہونے کے دعوے دار اس نوجوان نے اس ٹِک ٹاک ویڈیو میں مقدس زبان کے سے انداز میں جملے ادا کیے اور پھر نیچے کیپشن لکھا کہ ”ابلیس جاگ رہا ہے“ ۔ٹک ٹاک پر اس مقامی نوجوان کی ویڈیو دیکھتے ہی دیکھتے وائرل

ہوگئی اور لوگوں کی طرف سے شدید طیش بھرا ردِعمل سامنے آیا ہے۔سوشل میڈیا صارفین کا کہنا تھا کہ شیطان پر اللہ تعالیٰ نے لعنت نازل فرمائی ہے اور جو شخص خود کو سنجیدگی یا مذاق دونوں صورتوں میں شیطان قرار دیتا ہے، وہ اللہ کی نظر میں گناہ گار ہے اور معاشرے میں بھی شیطان کے ایجنٹ کا سا کام کر رہا ہے۔ ایسے شخص کے ساتھ قطعاً کوئی رعایت نہیں ہونی چاہیے۔اس نوجوان نے اپنا یہ فعل دیوانگی یا نشے کی حالت میں نہیں کیا، بلکہ وہ پُوری طرح ہوش حواس میں معلوم ہوتا ہے۔اگر اس نے یہ کام راتو رات ٹِک ٹاک اسٹار بننے کے لیے بھی کیا ہے تو اسے معافی نہیں دی جانی چاہیے۔ اس کا یہ گھناؤنا فعل سعودی سماجی و مذہبی اقدار کے سراسر منافی ہے۔ اس سے دیگر نوجوانوں کو بھی بے راہ روی کی ترغیب مِلے گی۔ درحقیقت اس نے پُورے معاشرے کو اپنی اس حرکت سے ایک چیلنج دیا ہے۔ تاہم کچھ صارفین کا کہنا تھا کہ نوجوان نے مذاق کیا ہے، اگرچہ یہ مذاق کوئی مناسب نہیں تھا، مگر پھر بھی اسے ہلکی پھُلکی سزا دے کر معاف کر دینا چاہیے۔اس نے کوئی سنگین جُرم نہیں کیا، جس پر اسے سخت سزا دینے کے مطالبے کیے جا رہے ہیں۔ اس کا یہ فعل اس کی اپنی ذات کے حوالے سے تھا۔ اس ویڈیو کے وائرل ہونے کے بعد پولیس بھی حرکت میں آ گئی۔ اور نوجوان کی نشاندہی ہونے کے بعد اسے اس کی رہائش گاہ سے گرفتار کر لیا گیا۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us