عمران خان کو اگر ہٹایا گیا تو وہ کیا کام کریں گے ؟


اسلام آبا د(مانیٹرنگ ڈیسک ) معروف صحافی صدیق جان کا کہنا ہے کہ اگر وزیراعظم عمران خان کو ہٹایا گیا ایسی مزاحمت کریں گے جیسی کسی نے نہ کی ہو گی۔تفصیلات کے مطابق اس وقت پاکستان تحریک انصاف شدید مشکلات کا شکار ہے،اتحادیوں کی مدد سے ببنے والی پی ٹی آئی کی حکومت ڈگمگا رہی ہے کیونکہ اتحادی اب منہ موڑنے لگے ہیں۔متحدہ قومی مومنٹ کے رہنما خالد مقبول صدیقی نے شدید تحفظات کا اظہار کیا جب کہ مسلم

لیگ ق کی جانب سے بھی تحفظات کی اطلاعات ہیں۔
ایسے میں حکومت کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑررہا ہے۔یہاں تک کہ تحریک انصاف کے اندر سے ہی لوگ آوازیں اٹھانے لگے ہیں۔پنجاب میں تو 20اراکین اسمبلی نے اپنا گروپ بنا لیا ہے۔اسی حوالے سے معروف صحافی صدیق جان کا کہنا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت خطرے میں ہے،عمران خان کی حکومت کسی بھی وقت جا سکتی ہے لیکن سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ اگر عمران خان کی حکومت کو واقعی کوئی خطرہ ہوتا تو پھر وہ ورلڈ اکنامک فارم میں شرکت کے لیے کیوں جاتے؟ اگر ایسا ہوتا پھر عمران خان کو اپنی حکومت بچانے کی فکر ہوتی ناکہ وہ بیرون ملک چلے جاتے۔

صدیق جان کا کہنا تھا کہ اس صورتحال کے حوالے سے میں نے مختلف رپورٹرز سے معلومات لی۔عدیل وڑائچ کا کہنا تھا کہ عمران خان کو چاہے حکومت کرنا آتی ہے یا نہیں لیکن انہیں اپوزیشن بہت اچھی کرنی آتی ہے۔اور اگرہم کہہ بھی دیتے ہیں کہ یہ حکومت 4 ووٹوں پر کھڑی ہے اور شہباز شریف وزیراعظم بن جاتے ہیں تو کیا عمران خان اس سیٹ اپ کو چلنے دیں گے ؟ کیا یہ سارے مسائل حل ہو جائیں گے؟ انہوں نے مزید کہا کہ ایسا ممکن نہیں کہ مسلم لیگ ق اور ن لیگ حکومت میں آئیں اور عمران خان انہیں چلنے دیں۔
صدیق جان نے مزید کہا کہ اگر عمران خان کو حکومت سے ہٹایا گیا تو وہ شدید مزاحمت کریں گے،اتنی مزاحمت شاید ہی پہلے کسی نے کی ہو۔صدیق جان نے مزید کہا کہ عمران خان کو حکومت سے ہٹانے کی کوشش کی گئی تو اگلی حکومت کو چلنے نہیں دیں،عمران خان ایسی مزاحمت کریں گے جیسی کسی نے نہ کی ہو گی اور نہ کر رہا ہوگا۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us