فارن فنڈنگ کیس میں پی ٹی آئی کی شامت 28 جنوری کو کیا ہونے والا ہے، پارٹی وکلاء کی دوڑیں


اسلام آباد (ویب ڈیسک) الیکشن کمیشن کی سکرونڑی کمیٹی نے فارن فنڈنگ کیس میں پی ٹی آئی کے جمع کرائے گئے ریکارڈ کا جائزہ لیتے ہوئے تحریک انصاف کا وکلاء کو 28 جنوری کو دوبارہ طلب کر لیا۔ کمیٹی کا 52 واں اجلاس ڈی جی لاء کی زیر صدارت ہوا، درخواست گزار اکبر ایس بابر نےمیڈیا سے گفتگو میں سکرونٹی کی کارکردگی پر مایوسی کا

اظہار کرتے ہوئے کہا انصاف ہوتا ہوا نہیں آرہا، یہی رفتار رہی تو مزید 2 سال لگ جائیں گے۔23 اکاؤنٹس کو ابھی تک نہیں دیکھا گیا۔ مجھے جان سے مارنے کی دھمکیاں اور آفر دی گئیں، تحریک انصاف کی حکومت مجھے جعلی مقدمات میں ملوث کر رہی ہے۔ مجھے نقصان پوا تو اس کا ذمہ دار الیکش کمیشن بھی ہوگا۔ الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) کی جانب سے غیرملکی فنڈنگ کیس میں ڈپٹی اٹارنی جنرل ثقلین حیدر پر اعتراض اٹھانے پر پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی ٹیم نے اسکروٹنی کمیٹی کے اجلاس سے واک آؤٹ کردیا۔ شائع رپورٹ کے مطابق غیرملکی فنڈنگ کیس میں ڈپٹی اٹارنی جنرل ثقلین حیدر پی ٹی آئی کی نمائندگی کررہے تھے۔ واضح رہے کہ پی ٹی آئی کے سابق رکن اور درخواست گزار اکبر ایس بابر نے 2014 میں ای سی پی میں فارن فنڈنگ کیس دائر کیا تھا اور الزام لگایا تھا کہ غیر قانونی غیر ملکی فنڈز میں تقریباً 30 لاکھ ڈالر 2 آف شور کمپنیوں کے ذریعے اکٹھے

کیے گئے اور یہ رقم غیر قانونی طریقے ‘ہنڈی’ کے ذریعے مشرق وسطیٰ سے پی ٹی آئی ملازمین کے اکاؤنٹس میں بھیجی گئی۔ انہوں نے یہ بھی الزام لگایا تھا کہ فنڈز اکٹھے کرنے کے لیے استعمال ہونے والے غیر ملکی اکاؤنٹس کو ای سی پی میں جمع سالانہ آڈٹ رپورٹس سے چھپایا گیا۔ اسکروٹنی کمیٹی کے دوسرے اجلاس میں ای سی پی نے 10 اکتوبر کو پی ٹی آئی کے اعتراض مسترد کردیے تھے۔ کمیشن کی جانب سے ہدایت کی گئی تھی کہ درخواست گزار اور پی ٹی آئی 14 اکتوبر کو اسکروٹنی کمیٹی کے سامنے پیش ہو کر اسکروٹنی کے عمل کو جلد از جلد مکمل کریں۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us