مسلم لیگ ن کے 13 ایم این اے اور 3 سینٹرز کی چوہدری نثار سے ملاقات


لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک ) آرمی ایکٹ میں ترمیم کی حمایت کرنے سے حزبِ اختلاف کی سب سے بڑی جماعت ن لیگ میں پھوٹ کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق پارلیمانی پارٹی کو اعتماد میں لیے بغیر آرمی ایکٹ میں ترمیم کی حمایت کی گئی جس کے سبب مسلم لیگ ن کے اکثر اراکین قومی اسمبلی و سینٹ پارٹی قیادت کے فیصلے پر برہم ہیں۔

Advertisement

مسلم لیگ ن کے 13 ایم این اے اور 3 سینٹرز نے سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان سے رابطے اور ملاقات کی ہے۔ن لیگ کے ارکان پارلیمنٹ نے چوہدری نثار علی خان کو پارلیمانی سیاست میں متحرک کردار ادا کرنے کا مشورہ دیا ہے۔لیگی ارکان پارلیمنٹ نے خواجہ آصف کے کردار پر بھی تحفظات کا اظہار کیا ہے۔چوہدری نثار سے ملاقات کرنے والے اراکین کا ماننا ہے کہ سابق وزیر داخلہ کا موقف درست تھا۔

لیگی اراکین نے کہا نواز شریف،اسٹیبلشمنٹ اوت چوہدری نثار کے درمیان دوریاں پیدا کرنے والے آج خود ساختہ ترجمان بنے ہوئے ہیں۔ن لیگ کے مذکورہ اراکن اسمبلی نے چوہدری نثار کو یقین دہانی کروائی کے وہ ملکی سیاست میں فعال کردار ادا کریں تو ان کو تنہا نہیں چھوڑیں گے۔جب کہ دوسری جانب طابق چوہدری نثار کا کہنا ہے کہ سیاست میں تھا، ہوں اوراللہ نے چاہا تو رہوں گا۔
وقت آنے پر چپ کا روزہ توڑ دوں گا۔سینٹر چوہدری تنویر خان کے گھر کی چادر اور چار دیواری کے تقدس کو پامال کرنے پر پزور مذمت کرتا ہوں۔ وہ حاجی شیخ غلام رسول کے صاحبزادے شیخ شہزاد کی شادی میں شرکت کے موقوں پر صحافیوں سے گفتگو کر رہے تھے۔چوہدری نثار نے کہا کہ ملکی حالات بہت خراب ہیں۔مہنگائی نے عوام کا بھرکس نکال دیا ہے۔دو نمبری عروج پر ہے۔حکومت کا اونٹ کس کروٹ بیٹھتا ہے۔کسی کو معلوم نہیں۔پچھلے الیکشن میں جو کچھ ہوا۔سب جانتے ہیں کون کتنے پانی میں تھا۔

 



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us