ایران کی جانب سے یوکرینی طیارہ مار گرائے جانے پر پاکستانی سابق جنرل کا بیان سامنے آگیا


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) یوکرئنی طیارے پر حملے کو انسانی غلطی قرار دینے سے معاملہ نہیں روکے گا ۔ دفاعی تجزیہ کار جنرل (ر) امجد شعیب نے کہا ہے کہ یوکرئنی طیارے پر حملے کو انسانی غلطی قرار دینے سے معاملہ نہیں روکے گا ۔ مغربی ممالک اس پر ایکشن لیں گے۔ ان کا کہنا ہے کہ ایران کے اعتراف سے اس کو ملک کے اندر سے بھی دباوٴ کا سامنا

Advertisement

کرنا پڑے گا ، انہوں نے کہا ہے کہ 82 کے قریب ایرانی بھی طیارے پر حملے سے جاں بحق ہوئے ۔
ایرانی حکومت دباوٴ کم کرنے کی کو شش میں اگر امداد بھی دے تو ایران کی معیشت اس قابل نہیں۔ جنرل (ر) امجد شعیب نے کہا ہے ہو سکتا ہے کہ یو کرئن بھی متاثرین کی داد رسی کا مطالبہ کر سکتا ہے۔
واضح رہے کچھ دیر قبل ایران نے یوکرائنی طیارے کوغیر ارادی طور پرمار گرانے کا اعتراف کیا تھا ۔ایران نے یوکرائنی طیارے کو مار گرانے کی غلطی کو تسلیم کر لیا ہے۔ ایرانی سرکاری ٹی وی نے فوج کا حوالہ دیتے ہوئے تسلیم کر لیا ہے کہ ان کی فوج نے غلطی سے یوکرائنی طیارے کو مار گرایا تھا۔ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف کا ٹوئیٹر پیغام میں کہا واقعے پر افسوس اور متاثرہ خاندانوں سے معذرت چاہتے ہیں۔ ایرانی وزیر خارجہ نے

افسوس کا اظہار کرتے ہوئے بتایا تھا کہ آرمی کی جانب سے تحقیقات کے ابتدائی نتائج سامنے آئے ہیں۔
ان کا کہنا ہے کہ امریکی مہم جوئی کے سبب پیدا ہونے والے بحران کی وجہ سے طیارہ انسانی غلطی کا شکار ہوا۔انہوں نے متاثرہ خاندانوں کے ساتھ افسوس کا اظہار کرتے ہوئے معذرت بھی کی ہے۔ مزید تفصیلات کے مطابق ایرانی حکام نے یہ تسلیم کر لیا ہے کہ ان کی فوج نے غلطی سے یوکرائن کے مسافر طیارے کو نشانہ بنایا۔

 



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us