آسٹریلیا کے خطرناک اونٹوں کو پاکستان پہنچانے کی کوششں ناکام اسلام آباد: آسٹریلیا کے خطرناک اونٹوں کو پاکستان سمیت مختلف ممالک پہنچانے کی کئی کوششیں ناکام ہو گئیں۔تفصیلات کے مطابق آسٹریلیا میں خشک سالی پر قابو پانے کے لیے پہلے مرحلے میں 10 ہزار اونٹوں کو گولیاں مار کر ہلاک کرنے کا مرحلہ شروع کر دیا گیا ہے۔ایسے سینکڑوں اونٹ متعدد بار پکڑ کر پاکستان سمیت مختلف ملکوں میں درآمد کرنے کی بھی کوششیں کی جا چکی ہیں۔ مگر جنگلی ’شطر بے مہار‘ کو قابو کرنا ناقابل عمل ہو چکا ہے۔پاکستانی میٹ کمپنی کے سربراہ کا کہنا ہے کہ انہوں نے آسٹریلوی بھیڑوں،بکروں اور گائے کی طرح ان اونٹوں کو بھی پاکستان لانے کی کوششیں کیں مگر ناکام ہوئے،آسٹریلوی اداروں نے اس سلسلے میں ان کی مدد کی۔انہوں نے مزید بتایا کہ اپنی جانیں خطرے میں ڈال کر انہوں نے جنگلی شطر ہے مہار کو پکڑا جو انتہائی مشکل مرحلہ تھا۔ جس میں کئی افراد زخمی بھی ہوئے۔جب اونٹوں کو پکڑ کر بحری جہاز میں پہنچایا گیا تو وہ اجنبی اور قید کے ماحول میں بدک گئے۔توڑ پھوڑ بھی کی جس سے شپ کے الٹ جانے کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے۔اور یوں سیکیورٹی خدشات کی بناء پر ان کی آسٹریلیا سے درآمد روکنا پڑی۔خیال رہے کہ ی آسٹریلیا کے محکمہ ماحولیات و پانی کا کہنا ہےکہ جنگلی اونٹوں کی موجودگی سے ملک میں خشک سالی میں بہت زیادہ اضافہ ہو رہا ہے۔ انکا کہنا ہے کہ اسٹریلیا نے 10 ہزار اونٹوں کو مارنے کی منظوری دے دی، اونٹوں کو گولی مارنے کا حکم خشک سالی کے باعث دیا گیا، اونٹوں کی وجہ سے ملک میں خشک سالی بہت زیادہ بڑھ رہی تھی، اس عمل کے لیے پروفیشنل شوٹرز ہیلی کاپٹروں کے ذریعے اپنا کام سر انجام دینگے۔ دوسری جانب آسٹریلیا میں گزشتہ سال لگنے والی آگ پر ابھی تک قابو نہیں پایا گیا تھا۔ مختلف رپورٹس کے مطابق اب تک جنگلات میں لگنے والی اس آگ نے تقریباََ 50 کڑور جانوروں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا اور وہ اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔ تفصیلات کے بعد کچھ مسلمانوں نے نماز استسقاء ادا کی تھی جس کے بعد بارش ہوئی تھی اور آگ کی شدت میں کمی دیکھنے میں آئی تھی۔ آسٹریلیا میں اس بھڑکتی ہوئی آگ نے ابھی تک 24 لوگوں کی جان لے لی ہے جب کہ ماحولیاتی خرابی میں بھی اضافے کے واضح امکانات ہیں ۔ ماہرین کی جانب سے اس بات کا ذکر بار بار کیا جا رہا تھا کہ اس آگ نے بہت سے جانوروں کی نسلوں کوتباہ کر دیا ہے۔دارلحکومت کینبرا میں ماحولیاتی حالات شدید خراب ہیں جس کے بعد پورے شہر میں دھواں ہی دھواں تھا۔ تفصیلات کے مطابق آسٹریلیا میں موجود کچھ مسلمانوں نے نماز استسقاء ادا کی تھی جس کے بعد آج ساوتھ ویلز اور وکٹوریہ میں بارش دیکھنے کو ملی تھی۔


شاسلام آباد: آسٹریلیا کے خطرناک اونٹوں کو پاکستان سمیت مختلف ممالک پہنچانے کی کئی کوششیں ناکام ہو گئیں۔تفصیلات کے مطابق آسٹریلیا میں خشک سالی پر قابو پانے کے لیے پہلے مرحلے میں 10 ہزار اونٹوں کو گولیاں مار کر ہلاک کرنے کا مرحلہ شروع کر دیا گیا ہے۔ایسے سینکڑوں اونٹ متعدد بار پکڑ کر پاکستان سمیت مختلف ملکوں میں درآمد کرنے کی بھی کوششیں کی جا چکی ہیں۔

مگر جنگلی ’شطر بے مہار‘ کو قابو کرنا ناقابل عمل ہو چکا ہے۔پاکستانی میٹ کمپنی کے سربراہ کا کہنا ہے کہ انہوں نے آسٹریلوی بھیڑوں،بکروں اور گائے کی طرح ان اونٹوں کو بھی پاکستان لانے کی کوششیں کیں مگر ناکام ہوئے،آسٹریلوی اداروں نے اس سلسلے میں ان کی مدد کی۔انہوں نے مزید بتایا کہ اپنی جانیں خطرے میں ڈال کر انہوں نے جنگلی شطر ہے مہار کو پکڑا جو انتہائی مشکل مرحلہ تھا۔ جس میں کئی افراد زخمی بھی ہوئے۔جب اونٹوں کو پکڑ کر بحری جہاز میں پہنچایا گیا تو وہ اجنبی اور قید کے ماحول میں بدک گئے۔توڑ پھوڑ بھی کی جس سے شپ کے الٹ جانے کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے۔اور یوں سیکیورٹی خدشات کی بناء پر ان کی آسٹریلیا سے درآمد روکنا پڑی۔خیال رہے کہ ی آسٹریلیا کے محکمہ ماحولیات و پانی کا کہنا ہےکہ جنگلی اونٹوں کی موجودگی سے ملک میں خشک سالی میں بہت زیادہ اضافہ ہو رہا ہے۔ انکا کہنا ہے کہ اسٹریلیا نے 10 ہزار اونٹوں کو مارنے کی منظوری دے دی، اونٹوں کو گولی مارنے کا حکم خشک سالی کے باعث دیا گیا، اونٹوں کی وجہ سے ملک میں خشک سالی بہت زیادہ بڑھ رہی تھی، اس عمل کے لیے پروفیشنل شوٹرز ہیلی کاپٹروں کے ذریعے اپنا کام سر انجام دینگے۔ دوسری جانب آسٹریلیا میں گزشتہ سال لگنے والی آگ پر ابھی تک قابو نہیں پایا گیا تھا۔ مختلف رپورٹس کے مطابق اب تک جنگلات میں لگنے والی اس آگ نے تقریباََ 50 کڑور جانوروں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا اور وہ اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔ تفصیلات کے بعد کچھ مسلمانوں نے نماز استسقاء ادا کی تھی جس کے بعد بارش ہوئی تھی اور آگ کی شدت میں کمی دیکھنے میں آئی تھی۔ آسٹریلیا میں اس بھڑکتی ہوئی آگ نے ابھی تک 24 لوگوں کی جان لے لی ہے جب کہ ماحولیاتی خرابی میں بھی اضافے کے واضح امکانات ہیں ۔ ماہرین کی جانب سے اس بات کا ذکر بار بار کیا جا رہا تھا کہ اس آگ نے بہت سے جانوروں کی نسلوں کوتباہ کر دیا ہے۔دارلحکومت کینبرا میں ماحولیاتی حالات شدید خراب ہیں جس کے بعد پورے شہر میں دھواں ہی دھواں تھا۔ تفصیلات کے مطابق آسٹریلیا میں موجود کچھ مسلمانوں نے نماز استسقاء ادا کی تھی جس کے بعد آج ساوتھ ویلز اور وکٹوریہ میں بارش دیکھنے کو ملی تھی۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us