آسٹریلیا کے جنگلا ت میں لگی آگ نبی کریم ﷺ کی کونسی بات نہ ماننے کی وجہ سے ہوئی ؟ آسٹریلیا کے غیر مسلم سائنسدانوں کی ایسی تحقیق کہ جان کر آپ بھی سبحا ن اللہ کہہ اٹھیں گے :بحوالہ صحیح بخاری


سڈنی (مانیٹرنگ ڈیسک ) آسٹریلیا میں سائنس دانوں نے انکشاف کیا ہے کہ ملک میں جاری جنگلاتی آگ کی سب سے بڑی وجہ چیل ہو سکتی ہے۔ غیرملکی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق یہ پرندہ دانستہ طور پر آگ پھیلانے پر کمر بستہ ہو جاتا ہے اس مقصد کے لیے چیل جلتی ہوئی چھوٹی سی چنگاری یا کسی شاخ کو منہ میں دبا کر اسے کسی دوسرے مقام پر جھاڑیوں

وغیرہ میں پھینک دیتی ہے جس سے آگ دیگر مقامات پر تیزی سے پھیل جاتی ہے۔ سڈنی یونیورسٹی کے سائنس دانوں کے مطابق زمین پر اونچی جھاڑیاں اور درخت چیل کو اپنے شکار پر نظر ڈالنے کی راہ میں حائل ہوتے ہیں، لہذا اس مسئلے کو حل کرنے کی غرض سے چیل زمین کو جلا ڈالنے کی پالیسی پر عمل کرتی ہے۔ اس طرح وہ اپنی راہ میں حائل ہونے والی تمام جھاڑیوں اور دیگر پودوں کو جلا کر خاکستر کرنے میں اہم کردار ادا کرتی ہے۔
محترم قارئین صحیح بخاری کی حدیث نمبر 3314میں ہے کہ
’’ عائشہ رضی اللہ عنہا نے بیان کیا کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ” پانچ جانور موذی ہیں ، انہیں حرم میں بھی مارا جا سکتا ہے چوہا ، بچھو ، چیل ، کوا اور کاٹ لینے والا کتا ‘‘۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us