ہم نے آرمی ایکٹ میں ترامیم کیخلاف ووٹ دیا، محسن داوڑ نے کیا اعلان کر دیا؟ جانیں


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) نارتھ وزیرستان کے ایم این اے محسن داوڑ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر پیغام جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم نے قومی اسمبلی سے واک آوٹ سے قبل پیش کئے جانے والے آرمی ایکٹ میں ترامیم کیخلاف ووٹ دیا ۔ تاہم پارلیمنٹ نے ربڑ سٹمپ کی مانند کام کیا۔ انہوں نے کہا کہ سپیکر قومی اسمبلی نے ہمارے اختلاف کی آوازوں کا

Advertisement

نظر انداز کیا ، اور اپنے مقدمے میں ہماری آوازوں کو شامل بھی نہ کیا۔ رکن قومی اسمبلی محسن داوڑ نے ان کے اختلاف کو نظر انداز کرنے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ آج پاکستانی پارلیمنٹ کی تاریخ کا سیاہ ترین دن تھا۔ پاکستان کو اس نقصان کو پورا کرنے کیلئے بہت وقت لگے گا۔
واضح رہے آج پاکستان آرمی، نیوی اور ایئرفورس ترامیمی ایکٹ 2020 پر رائے شماری کے لیے قومی اسمبلی کا اہم اجلاس ہوا۔ سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی زیر صدارت قومی اسمبلی کا اجلاس شروع ہوا۔
وزیراعظم عمران خان بھی اجلاس میں موجود تھے۔ اجلاس میں آرمی ایکٹ 2020ء پیش کیا گیا ۔ وزیر دفاع نے آرمی ایکٹ ترمیمی بل 2020 ء قومی اسمبلی میں پیش کیا ۔ آرمی ایکٹ

کی ترمیمی بل کی شق وار منظوری کا عمل شروع کیا گیا۔ آرمی ایکٹ ترمیمی بل ایوان میں پیش کرنے کی تحریک منظور کی گئی۔ جس کے بعد آرمی ایکٹ ترمیمی بل 2020ء منظور کر لیا گیا۔ قومی اسمبلی نے کثرت رائے سے آرمی ایکٹ ترمیمی بل 2020ء منظور کیا۔ قومی اسمبلی میں نیوی، ائیرفورس ایکٹ ترمیمی بل 2020ء بھی منظور کر لیا گیا ہے۔ جس پر مجس داوڑ کا کہنا ہے کہ پاکستان کی پارلیمنٹ کا آج سیاہ ترین دن تھا ، ہمارے آواز کو نظر انداز کیا گیا ۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us