جان کا بدلہ جان سے لیا جائے گا،ایران جنرل سلیمانی کا بدلہ لینے کیلئےکس امریکی شخصیت کی جان لے گا،ممکنہ اقدام سے امریکہ میں ہلچل مچ گئی


لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)سینئر تجزیہ نگار لیفٹیننٹ ریٹائرڈ جنرل امجد شعیب کا قاسم سلیمانی کے قتل کے بعد پیدا ہونےوالی صورتحال پر کہنا ہے کہ ٹرمپ کا اقدام انتہائی غیر ذمہ دارانہ ہے۔ قاسم سلیمانی کو ایران میں ہیرو کے طور پر لیا جاتا ہے ۔ٹرمپ یکطرفہ اقدام کے ماہر ہیں اس کی ہمیشہ اسرائیل کو خوش کرنے کی کوشش کررہی ہے۔پاکستان کو امریکا کے اس اقدام

کو غلط قرار دینا چاہیے۔اس کے لیے مذمت کا لفظ استعمال نہ کیا جائے، پاکستان کی جانب سے ایران کی حمایت اصولوں پر مبنی ہے۔ کشمیر کے معاملے پر ایران نے کھل کر حمایت کی تھی۔ اگر خطہ عدم استحکام کا شکار ہوجاتا ہے تو پھر چین، روس ترکی سب متاثر ہوں گے۔امجد شعیب نے مزید کہا کہ اب دیکھنا یہ ہے کہ ایران کیا قدم اٹھاتا ہے وہ امریکہ کے مفادات کو نشانہ بناتے ہیں، اسرائیل کو نشانہ بناتا ہے، سفارتخانے پر حملہ کرتا ہے جس میں امریکی شہری مارے جائیں گے،کیونکہ ایک اہم آدمی کی جان لی گئی ہے۔جان کا بدلہ جان ہوتا ہے۔ امریکا ایکا ایک ایسی طاقت ہے جس پر دنیا کا قانون لاگونہیں ہوتا۔دیکھنا ہے کہ امریکا کا ایران کے اقدام کا ردِعمل کیا آئے گا،آیا وہ ایران کے مفاد پر حملہ کرتا ہے یا ایران

پر براہ راست حملہ کرتا ہے۔ایران امریکہ کے افغانستان میں مفادات پر حملہ کرے گا ۔اس کشیدگی سے عالمی سطح پر پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھیں گی جس سے ہماری معیشت پر منفی اثرات مرتب ہونگے۔جب کہ دوسری جانب ہ امریکا نے قاسم سلیمانی کی ہلاکت کے بعد مشرق وسطیٰ میں مزید فوجی اہلکار بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ امریکا کی جانب سے مزید 3 ہزار فوجی اہلکار مشرق وسطیٰ میں تعینات کیے جائیں گے۔ ممکنہ طور پر ان امریکی فوجی اہلکاروں کی تعیناتی کویت میں ہوگی۔ امریکی دفاعی حکام اس تمام معاملے کی باقاعدہ تصدیق بھی کی ہے۔ دوسری جانب امریکی وزیر دفاع مارک ایسپرنے خبردار کیا ہے کہ انہیں پورا یقین ہے کہ عراقی حزب اللہ ملیشیا امریکی مفادات کے خلاف ایک اور اشتعال انگیز حرکت انجام دے سکتی ہے۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us