کیامسلم لیگ ن عمران خان کی حکومت میں شامل ہونے والی ہے،سینئر صحافی نے تہلکہ خیز دعویٰ کردیا


اسلام آباد (ویب ڈیسک) مسلم لیگ ن نے آرمی ایکٹ میں ترمیم سے متعلق حکومت کا ساتھ دینے کا فیصلہ سنادیا ہے اور اب سینئر صحافی چوہدری غلام حسین نے دعویٰ کیا ہے کہ ’حالیہ پیش رفت کے بعد شریف برادران کے بغیر مسلم لیگ ن اور تحریک انصاف کومل کر پنجاب اور مرکز میں حکومت بناتے دیکھ رہا ہوں، پنجاب اور وفاق میں ن لیگ کے چند نیک

نام آدمی شامل ہوجائیں گے اور حکومت تین یا ساڑھے تین سال تک چلے ‘۔وہ اے آروائے نیوز کے پروگرام ’ٹاپ سٹوری‘ میں گفتگو کررہے تھے ۔ چوہدری غلا م حسین کاکہناتھاکہ ن لیگ کی قیادت بھاگ کر لندن پہنچ گئی،اربوں روپے لوٹے ہیں اوربرے طریقے سے اپنی سیونگ کررہے ہیں، ان کا کوئی مستقبل نہیں۔ انہوں نے ساتھی صحافی صابر شاکر سے کہا کہ ”اجازت دیں تو کہنے کو تیار ہوں کہ جوحالیہ پیش رفت ہے ، اس کے بعد شریف برادران کے بغیر مسلم لیگ ن اور تحریک انصاف مل کر پنجاب اور مرکز میں حکومت بناتے دیکھ رہا ہوں، جس میں پنجاب اور وفاق میں ان کے چند نیک نام آدمی شامل ہوجائیں، تین ساڑھے سال حکومت چلے “۔صابر شاکر نے سوال کیا کہ یعنی شریف فیملی مائنس ہوجائے ، عمران خان کی کابینہ اور عثمان بزدار کی کابینہ میں ن لیگ کے لوگ شامل ہوجائیں ، یہی کہناچاہ رہے ہیں؟چوہدری غلام حسین نے کہا کہ میں یہ دیکھ رہاہوں، باقی وقت بتائے گا، ایسا جو آج ہورہاہے ، وہ بھی تو نہیں سوچا تھا، جنہوں نے اداروںکو بھی گالیاں دیں، سوشل میڈیا بریگیڈ وغیرہ بھی اب کہاں گئے؟یہ تو وقت ہی بتائے گا۔صابر شاکر نے کہا کہ ن لیگ اس وقت ایک ہی کام کررہی ہے اور وہ یہ کہ ہم آپ کیساتھ غیر مشروط چلنے کو تیار ہیں، صرف عمران خان کو ہٹادیں، اگر نہیں ہٹاتے تواس سال الیکشن کرائیں، وہ بڑی نپی تلی گفتگو کررہے ہیں۔

اس پر چوہدری غلام حسین نے کہاکہ الیکشن تو نہیں ہورہے، عمران خان مدت پوری کررہے ہیں اور ہوسکتاہے کہ اگلی باری بھی وہی لے جائیں، عمران خان کو بڑا نقصان تعیناتیوں اور نیب ترامیم پر ہورہاہے، ان کے حمایتی بھی اس کیخلاف بول رہے ہیں اورہمیں فون کررہے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ اپوزیشن سیاسی طورپر مکمل سرنڈر کرچکی ہے، ابھی بہت فائلیں ہیں، ان فائلوں کے وزن کے نیچے ہی دب جائیں گے ۔اس پر صابر شاکر نے دعویٰ کیا ہے کہ مسلم لیگ ن کی سینئر قیادت یعنی نوازشریف، شہبازشریف اور مریم نواز نے پارٹی رہنماؤں کو ہدایت کی ہے کہ اکتیس مارچ تک کسی بھی ادارے کیخلاف کوئی ایسی بات نہیں کرنی جس سے محاذ آرائی کاتاثر ابھرے، خاموش رہنا ہے اور پارٹی جس حدتک ہدایت دے، اس سے ایک انچ کم یا زیادہ نہیں بولنا،گزشتہ ایک ہفتے یادس دن تک نوٹ کرلیں ،اب یہ عدالتوں کی طرف بھی نہیں جائیں گے اور ان کی توجہ پارلیمنٹ پر ہوگی، الیکشن کمیشن آف پاکستان کی تشکیل اور الیکٹورل ریفارم کریںگے۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us