عدالت کی پھرتیاں۔۔وزیراعظم کے بھانجے حسان نیازی کی درخواست ضمانت خارج کرنے کے چند منٹ بعد ہی منظور کرلی


لاہور(نیوز ڈیسک ) لاہور کے پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی پر وکلاء حملہ کيس ميں نامزد وزيراعظم کے بھانجے حسان نیازی کو6 جنوری تک عبوری ضمانت مل گئی۔حسان نيازي عبوری ضمانت ختم ہونے پر انسداد دہشت گردی کی عدالت ميں پيش ہوئےتھے، جج نے تاخير سے آنے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے حسان نيازی کی عبوری ضمانت کی درخواست

خارج کر دی۔عدالت نے ريمارکس ديے کہ بطور وکيل آپ کو عدالتی وقت کا احساس ہونا چاہيے، قانون سب کے ليے برابر ہے۔پہلی درخواست خارج ہونے پر حسان نيازی نے ايک اور درخواست دائر کی جسے عدالت نے منظور کرتے ہوئے ايک لاکھ روپے کے مچلکے جمع کرانے کی ہدايت کی۔ پوليس کو ملزم کو 6 جنوری تک گرفتارکرنے سے روک ديا گيا ہے۔انسداددہشتگردی عدالت نے کيس ميں نامزد مزيد 9 وکلا کی عبوری ضمانت بھی منظور کرلی۔یاد رہے کہ لاہور کے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیو لوجی میں 11 دسمبر بدھ کے روز ہونے والے وکلاء کے حملے میں خاتون سمیت 3 مریض بروقت علاج نہ ملنے پر انتقال کرگئے تھے۔ وکلاء نے اسپتال میں توڑ پھوڑ کی اور ڈاکٹرز، عملے اور تیمارداروں کو تشدد

کا نشانہ بنایا جبکہ پارکنگ میں کھڑی گاڑیوں کے شیشے بھی توڑ ڈالے تھے۔پولیس نے اس واقعے میں ملوث 46 سے زائد وکلاء کو گرفتار کیا اور انہیں انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کیا گیا جہاں عدالت نے انہیں جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیجا تھا۔حسان نیازی پی آئی سی حملے کے بعد سے مفرور تھے، پولیس نے گرفتار ی کیلئے گھر پر کئی چھاپے بھی مارے تاہم گرفتاری ممکن نہ ہوسکی اور کیس میں نامزدگی کے بعد 20 دسمبر کو منظرعام پرآنے والے حسان نیازی نے انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت سے ضمانت قبل ازگرفتاری حاصل کی تھی۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us