آرمی ایکٹ اور نیب قوانین میں ترمیم، وزیراعظم اپوزیشن سے مذاکرات کیلئے آمادہ ہوگئے


اسلام آباد(نیوز ڈیسک)وزیراعظم کی زیر صدارت کابینہ کے اجلاس میں نیب آرڈیننس کو پارلیمنٹ اور آرمی ایکٹ میں تبدیلی کرانے کا فیصلہ پارلیمنٹ میں زیربحث لانے کا فیصلہ کیا ہے۔ تفصیل کے مطابق کابینہ کے اجلاس میں وزیراعظم بھی اپوزیشن کی ترامیم بل میں شامل کرنے پر آمادہ ہو گئے ہیں۔ پرویز خٹک کی سربراہی میں حکومتی کمیٹی اپوزیشن سے

مذاکرات کریگی۔کابینہ نے اجلاس میں منظور بل میں آرمی چیف کی مدت ملازمت اور سوسیع کا طریقہ کار وضع کیا گیا ۔ ذرائع کے مطابق وفاقی وزیر پرویز خٹک آرمی ایکٹ کی منظوری کیلئے اپوزیشن سے رابطے کریں گے اور ممکنہ طور پر مذاکرات بھی کریں گے۔ بتایا گیا ہے کہ قومی اسمبلی اور سینیٹ کے اجلاس میں مسودہ پیش کرکے زیر بحث لایا جائے گا۔واضح رہے اس سے قبل سپریم کورٹ نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے متعلق قانون سازی کے لئے حکومت کو پارلیمنٹ کا پابند کرتے ہوئے کہا تھا کہ ایکٹ آف پارلیمنٹ کے ذریعے 6 ماہ میں آرٹیکل 243 کی وسعت کا تعین کیا جائے فیصلے میں کہا گیا تھا آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع چیلنج کی گئی، حکومت نے یقین دلایا 6 ماہ میں اس معاملےپرقانون سازی ہوگی، حکومت نے 6ماہ میں قانون سازی کی تحریری یقین دہانی کرائی، 6 ماہ بعداس سلسلے میں کی گئی قانون سازی کاجائزہ لیا جائے گا. سپریم کورٹ کا

کہنا تھا کہ اس معاملے پرقانون سازی کرناپارلیمنٹ کااختیار ہے ، قانون سازی کے لئے معاملہ پارلیمنٹ بھیجا جائے، تحمل کا مظاہرہ کرکے معاملہ پارلیمنٹ پر چھوڑتے ہیں، پارلیمنٹ آرٹیکل 243 اور ملٹری ریگولیشن 255 کے سقم دور کرے.تاہم اب وزیراعظم نے اپوزیشن سےرابطے کیلئے پرویز خٹک کو ٹاسک دے دیا ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے کابینہ اجلاس میں اپوزیشن کی ترامیم بھی بل میں شامل کرنے کی اجازت دی ہے۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us