بے گھر افراد کیلئے بنائی گئی پناہ گاہ ایک دن میںبند کردی گئی


اسلام آباد(نیوز ڈیسک) وزیراعلیٰ عثمان بزدار کی ہدایت پر سیالکوٹ کی تحصیل ڈسکہ میں بے گھر افراد کے لئے پناہ گاہ بنائی گئی تھی جو کہ ایک دن میں ہی بند ہو گئی ہے۔ لوگ سڑکوں پر رہنے اور کوڑے سے کھانا کھانے پر مجبور ہو گئے ہیں۔2 دن پہلے پناہ کا قیام عمل میں لایا گیا تھا، لیکن اس کی مدت شاید ایک دن ہی تھی۔ انتظامیہ کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ شارٹ سرکٹ کی وجہ سے ہمیں پناہ گاہ بند کرنی پڑی ہے، انہوں نے اس بات کا یقین

دلایا ہے کہ جیسے ہی شارٹ سرکٹ کا مسئلہ حل ہو جائے گا، پناہ گاہ کو دوبارہ کھول دیا جائے گا۔وزیراعظم عمران خان کی جانب سے پاکستان کے ہر شہر میں پناہ گاہیں بنانے کا اعلان کیا گیا تھا۔ سردی کی بڑھتی شدت میں اضافے کو مدنظر رکھتے ہوئے عمران خان نے ہدایت کی تھی کہ ہر شہر میں پناہ گاہیں بنائی جائیں اور بے گھر افراد کو وہاں رکھا جائے۔یاد رہے کہ وزیراعظم کی ہدایت پر بہت سی پناہ گاہیں اورلنگر خانوں کا قیام عمل میں لایا جا چکا ہے جس میں ان افراد کو چھت مہیا کی جائے گی جو بے گھر ہیں اور ساتھ ہی ساتھ انہیں صاف اور اچھا کھانا فراہم کیا جائے گا۔ان تمام عناصرکو مدنظر رکھتے ہوئے عثمان بزدار نے سیالکوٹ کی تحصیل ڈسکہ میں پناہ گاہ بنانے کا حکم جار ی کیا تھا۔ مگر بد قسمتی سے پناہ گاہ میں لوگ صرف ایک دن کے لئے ہی رہ سکے۔ انتظامیہ کو شارٹ سرکٹ کا سامنا کرنا پڑا

اور اسی وجہ سے پناہ گاہ کو بند کرنا پڑا۔انتظامیہ کی جانب سے یقین دہانی کروائی جا رہی ہے کہ بہت جلد شارٹ سرکٹ کا مسئلہ حل کر دیا جائے گااور پناہ گاہ کو ایک مرتبہ پھر لوگوں کے لئے کھول دیا جائے گا۔ سیالکوٹ کی تحصیل ڈسکہ میں قائم پناہ گاہ شارٹ سرکٹ کے باعث بند کرنا پڑ گئی۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us