سعودی عرب، روس اور ترکی سمیت 4خلیجی ممالک سی پیک میں شمولیت کے خواہشمند


اسلام آباد(نیوز ڈیسک)سعودی عرب، روس ، ترکی ،خلیجی ممالک سی پیک میں شمولیت کے خواہشمند ہیں۔ قومی اخبار کی رپورٹ کے مطابق قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی منصوبہ نے بندی ،ترقی اصلاحات نے داسو ہائیڈرو پروجیکٹ کی تعمیر کے لیے حاصل کی گئی اراضی ،متاثرین کو ادائیگی ،متاثرین کو دئیے گئے اراضی کے ریٹس سے متعلق تفصیلات طلب کر لی ہیں۔اور ہدایت کی ہے کہ پروجیکٹ پر ہونے والی پیش رفت سے ماہانہ بنیادوں پر کمیٹی کو

رپورٹ بھیجی جائے۔سی پیک اتھارٹی کے آرڈیننس سے متعلق بتایا گیا ہے کہ آرڈیننس تیار ہو چکا ہے۔سعودی عرب،روس ،ترکی اور خلیجی ممالک سی پیک میں شامل ہونے کے خواہشمند ہیں۔اور پروجیکٹ سے متاثرہ علاقوں میں اسپپتال،سکول ،سڑکیں اور دیگر سہولیات فراہم کی جائیں۔قائمہ کمیٹی نے سفارش کی کہ ملک کے تمام علاقوں میں مساوی بنیادوں پر پائیدار ترقی کے اہداف کے حصول کے لیے ترقیاتی اخراجات مختص کیے جائیں۔کمیٹی نے سفارش کی کہ سی پیک اتھارٹی کے لیے مزید قانون سازی کی جائے۔نیلم جہلم ہائیڈرو پروجیکٹ نیلم جہلم سرچارج کی مد میں اب تک 70 ارب جمع ہو چکے ہیں۔جب کہ دوسری جانب وفاقی وزیر منصوبہ بندی و ترقی اسد عمر نے کہا ہے کہ سال 2020ء کے دوران چین پاکستان اقتصادی راہداری (سی پیک) کے ثمرات ملنا شروع ہو جائیں گے جس

سے صنعت و زراعت سمیت معیشت کے پیداواری شعبے ترقی کریں گے ،ق وفاقی وزیر نے کہا کہ سی پیک کے تحت 2020ء میں مکمل ہونے والے بڑے منصوبوں میں تجارتی سہولیات اور شاہراہ قراقرم کا حویلیاں سے تھاکوٹ تک 118کلو میٹر کی تعمیر کا دوسرا مرحلہ اور سکھر سے ملتان392 کلو میٹر ہائی وے کی تعمیر شامل ہے۔وفاقی وزیرنے کہاکہ ان منصوبوں سے سفر کادورانیہ کم کرنے اور تجارتی سامان کی آسان ترسیل اور خدمات کی بہتر فراہمی میں مدد ملے گی۔ انہوں نے کہاکہ چین کی جانب سے گوادر میں ہوائی اڈے کی تعمیراورسڑکوں کے بنیادی ڈھانچے کی بہتری کے لئے 40 ارب روپے کی سرمایہ کاری کی جارہی ہے۔ اسد عمر نے کہاکہ 2020 میں سی پیک کے تحت 9 ارب ڈالرکی لاگت سے ریلوے کی مین لائن کو اپ گریڈ کرنے کا بڑا منصوبہ شروع کیاجائیگا جس سے ریلوے کے بنیادی ڈھانچے کوبہتر بنایا جائے گا اور مال برداری سمیت مسافروں کو خاطر خواہ سہولت حاصل ہوگی ۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us