پٹرول کی قیمت بڑھنا کوئی خبرنہیں،قیمت میں صرف 2 روپے اضافہ ہوا ،جمشید اقبال چیمہ لاہور(نیوز ڈیسک)پٹرول کی قیمت میں اضافے پر تبصرہ کرتے ہوئے رہنما تحریک انصاف جمشید اقبال چیمہ نے انوکھی منطق پیش کردی ۔ نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کے دوران جمشید اقبال کا کہنا ہے۔ پٹرول کی قیمت بڑھنا کوئی خبرنہیں۔ جس پر پروگرام کے اینکر نے ردعمل دیا کہ یہ بات تو عوام بتائیں گے کہ پیٹرول کی قیمت بڑھنا کتنی بڑی خبر ہے۔جمشید اقبال چیمہ نے انوکھی منطق پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ پیٹرول کی2 روپے قیمت بڑھنا کوئی بڑی بات نہیں ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ایل پی جی کی موجودہ قیمت زیادہ ہے تاہم پٹرول کی قیمت بڑھنا کوئی بڑی بات نہیں ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی برآمدات بڑھی ہیں۔ پاکستان کی معیشت درست راستے پر گامزن ہے۔ ان کا کہنا تھاکہ ریاست مدینہ میں لوگ پیٹ پر پتھر باندھا کرتے تھےبعدازں کوئی زراعت لینے والا نہ ملتا تھا۔واضح رہے کہ سال2019،پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں مجموعی طور پرچھ مرتبہ اضافہ چار مرتبہ کمی اور دو مرتبہ قیمتیں برقرار رکھی گئیں۔وفاقی حکومت نے ماہ جنوری کیلیے پیٹرولیم مصنوعات میں کمی کا اعلان کیا تھا۔ اس ماہ پٹرول کی قیمت میں فی لیٹر 4 روپے 86 پیسے، ڈیزل 4 روپے 26 پیسے، مٹی کا تیل 52 پیسے اور لائٹ ڈیزل میں دو روپے 16 پیسے فی لیٹر کمی کی گئی جس کے بعد پیٹرول 90 روپے 97 پیسے، ہائی اسپیڈ ڈیزل 106 روپے 68 پیسے، مٹی کا تیل 82 روپے 98 پیسے اور لائٹ ڈیزل 75 روپے 28 پیسے ہوگیا تھا۔اپریل میں مسلسل دوسری مرتبہ اضافہ کیا گیا جس کے بعد پیٹرول چھ روپے اضافے کے ساتھ 98 روپی88 پیسے ڈیزل چھ روپے اضافے کے ساتھ 117 روپی43 پیسے مٹی کا تیل اور لائٹ ڈیزل باالترتیب تین تین روپے اضافے کے ساتھ 89 روپے 31 پیسے اور اسی روپے 54 پیسے کا ہوگیا۔ مئی میں مسلسل تیسری بار پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کیا گیا، اگست میں قیمتیں پھر بڑھائی گئیں، پیٹرول پانچ روپے 15پیسے اضافے کے ساتھ 117 روپے 83 پیسے، ڈیزل 5 روپے 65 پیسے اضافے 132 روپے 47 پیسیمٹی کا تیل 5 روپے 38 پیسے اضافے کے ساتھ 103 روپے 84 پیسے جبکہ لائٹ ڈیزل 8روپے 90 پیسے اضافے کے ساتھ 90 روپے 52 پیسے ہوگیا تھا۔چھ ماہ کے طویل انتظار کے بعد ستمبر میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کی گئی اورپٹرول 4 روپی59پیسے کمی کے بعد 113 روپے 24 پیسے ڈیزل 5 روپے 33پیسے کمی سی127روپی14پیسے،مٹی کا تیل چار روپی27پیسے کمی سی99روپے 57 پیسے اورلائٹ ڈیزل5روپے 63 پیسے کمی سی91روپی89 پیسے کا ہوگیا تھا، ماہ نومبر کیلئے پیٹرول کی قیمت میں ایک روپے اور ہائی اسپیڈ ڈیزل میں 27 پیسے فی لیٹر کا اضافہ کر دیا ہے ۔دسمبر میں وفاقی حکومت نے پٹرول کی قیمت میں 25 پیسے فی لیٹر کمی جس کے بعد پیٹرول کی نئی قیمت 113 روپے 99 پیسیفی لیٹر ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت میں دو روپے 40 پیسے فی لیٹر کی کمی کی گئی ہے جس کے بعد ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت 125 روپے ایک پیسے مٹی کا تیل 83 پیسے سستا ہونے کے بعد 96 روپے 35 پیسے اورلائٹ ڈیزل 2 روپے 90 پیسے کمی کے بعد 83 روپے 43 پیسے ہوگیا تھا۔ تاہم نے کے تحفے کے طور پر حکومت نے پٹرول کی قیمت میں 2 روپے 25 پیسے قیمت بڑھا دی ہے۔


شلاہور(نیوز ڈیسک)پٹرول کی قیمت میں اضافے پر تبصرہ کرتے ہوئے رہنما تحریک انصاف جمشید اقبال چیمہ نے انوکھی منطق پیش کردی ۔ نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کے دوران جمشید اقبال کا کہنا ہے۔ پٹرول کی قیمت بڑھنا کوئی خبرنہیں۔ جس پر پروگرام کے اینکر نے ردعمل دیا کہ یہ بات تو عوام بتائیں گے کہ پیٹرول کی قیمت بڑھنا کتنی بڑی خبر

ہے۔جمشید اقبال چیمہ نے انوکھی منطق پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ پیٹرول کی2 روپے قیمت بڑھنا کوئی بڑی بات نہیں ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ایل پی جی کی موجودہ قیمت زیادہ ہے تاہم پٹرول کی قیمت بڑھنا کوئی بڑی بات نہیں ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی برآمدات بڑھی ہیں۔ پاکستان کی معیشت درست راستے پر گامزن ہے۔ ان کا کہنا تھاکہ ریاست مدینہ میں لوگ پیٹ پر پتھر باندھا کرتے تھےبعدازں کوئی زراعت لینے والا نہ ملتا تھا۔واضح رہے کہ سال2019،پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں مجموعی طور پرچھ مرتبہ اضافہ چار مرتبہ کمی اور دو مرتبہ قیمتیں برقرار رکھی گئیں۔وفاقی حکومت نے ماہ جنوری کیلیے پیٹرولیم مصنوعات میں کمی کا اعلان کیا تھا۔ اس ماہ پٹرول کی قیمت میں فی لیٹر 4 روپے 86 پیسے، ڈیزل 4 روپے 26 پیسے، مٹی کا تیل 52 پیسے اور لائٹ ڈیزل میں دو روپے 16 پیسے فی لیٹر کمی کی گئی جس کے بعد پیٹرول 90 روپے 97 پیسے، ہائی اسپیڈ ڈیزل 106 روپے 68 پیسے، مٹی کا تیل 82 روپے 98 پیسے اور لائٹ ڈیزل 75 روپے 28 پیسے ہوگیا تھا۔اپریل میں مسلسل دوسری مرتبہ اضافہ کیا گیا جس کے بعد پیٹرول چھ روپے اضافے کے ساتھ 98

روپی88 پیسے ڈیزل چھ روپے اضافے کے ساتھ 117 روپی43 پیسے مٹی کا تیل اور لائٹ ڈیزل باالترتیب تین تین روپے اضافے کے ساتھ 89 روپے 31 پیسے اور اسی روپے 54 پیسے کا ہوگیا۔ مئی میں مسلسل تیسری بار پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کیا گیا، اگست میں قیمتیں پھر بڑھائی گئیں، پیٹرول پانچ روپے 15پیسے اضافے کے ساتھ 117 روپے 83 پیسے، ڈیزل 5 روپے 65 پیسے اضافے 132 روپے 47 پیسیمٹی کا تیل 5 روپے 38 پیسے اضافے کے ساتھ 103 روپے 84 پیسے جبکہ لائٹ ڈیزل 8روپے 90 پیسے اضافے کے ساتھ 90 روپے 52 پیسے ہوگیا تھا۔چھ ماہ کے طویل انتظار کے بعد ستمبر میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کی گئی اورپٹرول 4 روپی59پیسے کمی کے بعد 113 روپے 24 پیسے ڈیزل 5 روپے 33پیسے کمی سی127روپی14پیسے،مٹی کا تیل چار روپی27پیسے کمی سی99روپے 57 پیسے اورلائٹ ڈیزل5روپے 63 پیسے کمی سی91روپی89 پیسے کا ہوگیا تھا، ماہ نومبر کیلئے پیٹرول کی قیمت میں ایک روپے اور ہائی اسپیڈ ڈیزل میں 27 پیسے فی لیٹر کا اضافہ کر دیا ہے ۔دسمبر میں وفاقی حکومت نے پٹرول کی قیمت میں 25 پیسے فی لیٹر کمی جس کے بعد پیٹرول کی نئی قیمت 113 روپے 99 پیسیفی لیٹر ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت میں دو روپے 40 پیسے فی لیٹر کی کمی کی گئی ہے جس کے بعد ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت 125 روپے ایک پیسے مٹی کا تیل 83 پیسے سستا ہونے کے بعد 96 روپے 35 پیسے اورلائٹ ڈیزل 2 روپے 90 پیسے کمی کے بعد 83 روپے 43 پیسے ہوگیا تھا۔ تاہم نے کے تحفے کے طور پر حکومت نے پٹرول کی قیمت میں 2 روپے 25 پیسے قیمت بڑھا دی ہے۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us