پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کالعدم قرار دیا جائے، لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کردی گئی


اسلام آباد (نیوز ڈیسک)لاہور ہائیکورٹ میں سال 2020 کی پہلی درخواست دائرپٹرول مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کر دیا گیا۔حکومت کی جانب سے نئے سال کے آغاز میں عوام کے لئے پٹرول کی قیمتوں میں اضافہ کیا گیا تھا۔ حکومت کے اس فیصلے کے خلاف لاہور ہائیکورٹ میں دائر کر دی گئی۔ تفصیلات کے مطابق درخواست

ایڈوکیٹ اظہر صدیقی نے دائر کی جس میں آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) ، وزارت پیڑولیم اور وفاقی حکومت کو فریق بنایا گیا۔درخواست گزار کا کہنا ہے کہ پٹرولیم مصنوعات میں اضافہ کا فیصلہ عدالت عالیہ میں چل رہا ہے اور حکومت نے اس فیصلے کی منظوری کابینہ سے بھی نہیں لی۔ایڈووکیٹ اظہر صدیقی نے عدالت سے استدعا کی ہے کہ پٹرولیم مصنوعات میں اضافہ کو کالعدم قرار دیا جائے اور قیمتوں میں کمی لائے جائے، ان کا مزید کہنا تھا کہ عوام غریب ہے، وہ اس طرح کے فیصلے برداشت نہیں کر سکتی۔ان کا مزید کہنا تھا کہ عوام پہلے ہی مہنگائی کی چکی میں پس رہی ہے، ان پر رحم کیا جائے اوراس طرح کے فیصلے لینے سے گریز کیا جائے۔یاد رہے کہ وفاقی حکومت نے نئے سال کے تحفے میں عوام کو پٹرولیم مصنوعات میں اضافہ کرکے دیا ہے۔ نوٹیفیکیشن جاری کر دیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اس فیصلے پر عمل یکم جنوری سے کیا جائے گا۔حکومت کے جاری کردہ نوٹیفیکیشن کے مطابق پٹرول کی قیمتوں میں 2 روپے61 پیسے اضافہ کیا گیا ہے جس کہ ڈیزل کی قیمتوں میں 2 روپے25 پیسے اضافہ کیا گیا ہے۔اسی کے علاوہ مٹی کے تیل کی قیمت میں بھی حیران کن طور پر 3روپے 10 پیسے اضافہ کر دیا گیا ہے۔یاد رہے کہ حکومت کے اس فیصلے کے خلاف لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کر دی گئی ہے اور اس فیصلے کو کالعدم قرار دینے کی اپیل کر دی ہے۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us