پاکستانیوں کی بہت بڑی تعداد کو سعودی عرب سے ملک بدر کر دیا گیا


سلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) جس کا خدشہ تھا وہی ہوا ، ترک صدر نے سعودی عرب کی جانب سے 40لاکھ پاکستانیوں کو نکالنے کا ملک بدر کرنے کا انکشاف کیا مگر سعودی عرب نے کتنے پاکستانیوں کو ڈی پورٹ کر ڈالا۔۔۔ سعودی عرب کی جانب سے 40 ہزار پاکستانیوں سے روزگار چھین لیا گیا، سعودی حکومت نے سیکورٹی خدشات اور مبینہ قوانین کی خلاف

ورزی کو بنیاد بنا کر گزشتہ 4 ماہ کے دوران ہزاروں پاکستانیوں کو ڈی پورٹ کیا۔ سعودی عرب میں گزشتہ دو سال سے سعودائزیشن کی پالیسی پر عمل درآمد کیا جا رہا ہے جس کے منفی اثرات پاکستانی ملازمین پر بھی پڑنے لگے ہیں۔
کئی اہم شعبوں سے لاکھوں پاکستانی ملازمین کی چھُٹی ہو چکی ہے۔ جبکہ انگیزی اخبار انڈی پینڈنٹ کے مطابق سعودی حکومت نے صرف گزشتہ 4 ماہ کے دوران ہزاروں پاکستانیوں کو سعودی عرب سے نکال باہر کیا ہے۔ دعویٰ کیا گیا ہے کہ سعودی حکومت نے سیکورٹی خدشات اور مبینہ طور پر کی گئی قوانین کی خلاف ورزی کو بنیاد بنا کر 4 ماہ کے دوران 40 ہزار پاکستانیوں کو مملکت سے ڈی پورٹ کر دیا۔
سعودی حکومت کی جانب سے اتنے بڑے پیمانے پر کیے جانے والے کریک ڈاون کے باعث

سعودی عرب میں مقیم پاکستانی شدید تشویش میں مبتلا ہیں۔ یہاں یہ بات واضح رہے کہ ملائیشیا سمٹ میں شرکت کے حوالے سے پاکستان اور سعودی عرب کے تعلقات میں مبینہ طور پر کچھ تناو پیدا ہوا تھا جس کے بعد سعودی حکومت نے مبینہ طور پر پاکستانی حکومت کو دھمکیاں بھی دیں۔
ترک صدر رجب طیب اردگان کا دعویٰ ہے کہ سعودی حکومت نے پاکستان کی معاشی مجبوریاں کا فائدہ اٹھایا اور اسے دھمکیاں دے کر ملائیشیا سمٹ میں شرکت سے روکا۔ ترک صدر کا دعویٰ ہے کہ سعودی عرب نے دھمکی دی کہ اگر پاکستان نے ملائیشیا سمٹ میں شرکت کی تو سعودی عرب میں کام کرنے والے چالیس لاکھ پاکستانیوں سے روزگار چھین کر ان کی جگہ بنگلہ دیشیوں کو بھرتی کر لیا جائے گا۔ سعودی عرب کی اسی دھمکی کے باعث وزیراعظم عمران خان ملائیشیا سمٹ میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کرنے پر مجبور ہوئے۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us