پیپلز پارٹی کوئی دھرنا یا لاک ڈائون نہیں کر رہی ، نفیسہ شاہ


راولپنڈی (آن لائن) پاکستان پیپلز پارٹی کی مرکزی سیکرٹری اطلاعات و ایم این اے ڈاکٹر نفیسہ شاہ نے کہاہے کہ بلاول بھٹو زرداری پہلی دفعہ اپنی والدہ کی برسی منانے کے لئے لیاقت باغ آ رہے ہیں لیکن مخالفین اور ضیاء کی باقیات وقت کے حکمرانوں کو یہ پسند کیوں نہیں آ رہا، بابو کہتے ہیںکہ جلسہ نہیں کرسکتے لیکن شہید ذوالفقار علی بھٹو کے فلسفے سے

عشق کرنے والے لیاقت باغ کی طرف رواں دواں ہیں، پیپلز پارٹی کوئی دھرنا یا لاک ڈائون نہیں کر رہی عوام کی بات کرنے کے لئے اور اپنے منشور کو آگے بڑھانے کے لئے جلسہ کیا جا رہاہے۔ سو دن سے سینٹ کا اجلاس نہیں بلایا گیا، اسمبلی کا اجلاس بلایا جاتا ہے لیکن دوسرے دن ملتوی کر دیا جاتا ہے، پارلیمنٹ کی آواز دبائی جا رہی ہے، مہنگائی کا بوجھ عوام پر ڈال دیا گیا ہے، اب بہت ضروری ہے کہ ایسی مہم کا آغاز ہو، وزیراعظم امریکہ میں صرف ایک تقریب کے بعد مسئلہ کشمیر کو بھول گئے ہیں، اسلامی امہ کا بڑا لیڈر کہلوانے والا کوالالمپور اجلاس میں نہیں جاتا، نالائق سلیکٹڈ اور نا اہل ترین حکمران اس وقت عوام پر مسلط ہیں۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے لیاقت باغ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ان کے ہمراہ سینیٹر روبینہ خالد ، پیپلز پارٹی آزاد کشمیر کی سیکرٹری اطلاعات شاہین ڈار، سردار ایوب، گلگت بلتستان کی سیکرٹری اطلاعات سعدیہ دانش، شعبہ خواتین پنجاب کی سیکرٹری جنرل نرگس فیض ملک اور نذیر ڈھوکی بھی تھے۔ نفیسہ شاہ نے کہاکہ آج کا دن ہم مسیح برادری کی خوشی میں برابر کے شریک ہیں اور ان کو مبارک باد دیتے ہیں اور قائداعظم کی

سالگرہ پر بھی مبارک باد پیش کرتے ہیں۔ لیاقت باغ کو ایک تاریخی حیثیت حاصل ہے ۔ ستائیس دسمبر 2007 یہاں شہید ہوئیں اور ان کی جائے شہادت پر پہلی دفعہ چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری اپنی ماں کی برسی منانے کے لئے یہاں آ رہے ہیں۔ پورے ملک سے بھٹوکے فلسفے سے عشق کرنے والے جیالوں کے قافلے لیاقت باغ کی طرف رواں دواں ہیں لیکن مخالفین اور ضیاء کی باقیات اور وقت کے حکمرانوں کو یہ پسند نہیں ہے اور ان کو تکلیف ہو رہی ہے ہمارے جیالوں کی ٹرینوں کی ٹکٹیں واپس کی جا رہی ہیں اور چیئرمین نیب کی طرف سے چیئرمین پیپلز پارٹی کو نوٹس بھجوائے جا رہے ہیں انہوں نے کہاکہ اب بابو کہتے ہیں کہ ہم لیاقت باغ میں جلسہ نہیں کر سکتے صرف اس وجہ سے کہ پیپلز پارٹی کے چاہنے والے بڑی تعدادمیں آ رہے ہیں ہم کوئی دھرنا یا لاک ڈائون نہیں کر رہے ہم اس موقع پر عوام کی اور ان کے مسائل کی بات کریں گے لیکن سلیکٹڈ حکمران اس سے خائف ہو رہے ہیں ہم اسلامی فلاحی ریاست اور اپنے منشور کو آگے بڑھانے کے لئے آ رہے ہیں۔ انہو ںنے کہا کہ سو دن سے سینٹ کااجلاس نہیں بلایا گیا اسمبلی کااجلاس بلایا جاتا ہے لیکن دوسرے دن ہی اس کو ملتوی کر دیا جاتا ہے۔ پارلیمنٹ کی آواز دبائی جا رہی ہے۔ الیکشن کمیشن ملک میں الیکشن نہیں کروا رہے انہوں نے کہاکہ آرمی چیف کی ایکسٹیشن کی وجہ سے افراتفری پھیلا دی گئی ہے۔ عوام پر مہنگائی کا بوجھ ڈال دیا گیا ہے۔ وزیراعظم امریکہ میں جا کر صرف ایک تقریر کر کے آتے ہیں تو واپس آ کر کشمیر کا مسئلہ بھول جاتے ہیں۔ سینیٹر روبینہ خالد نے کہا کہ نالائق، سلیکٹڈ اور نا اہل ترین حکمران وہاں پر مسلط ہیں۔ پیپلز پارٹی کے جلسے کو سبوتاژ کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے اگر جیالے اور جیالیاں کھڑے ہو گئے تو انہیں چھپنے کی جگہ نہیں ملے گی۔ پیپلزپارٹی امن کی سیاست کرتی ہے۔ سعدیہ دانش نے کہا کہ مشرف کی باقیات جلسے کو ناکام کرنے کی کوشش کر رہی ہیں لیکن جیالے پیچھے ہٹنے والے نہیں ہیں۔ بے نظیر کا علم جہاں سے گرا تھا وہاں سے اٹھایا جائے گا۔ ذوالفقار علی بھٹو کے بعد بلاول بھٹو زرداری نے گلگت بلتستان کے چپے چپے کا دورہ کیا ہے۔ ان کے علاوہ دیگر نے بھی خطاب کیا



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us