آئندہ ماہ تبدیلی آکر رہے گی،سرگرم گروپ کا دعوی #h# کوئٹہ (آن لائن)وزیراعلی بلوچستان جام کمال خان کی حکومت کیخلاف ایک بار پھر بلوچستان عوامی پارٹی کے وزراء اور اراکین اسمبلی سرگرم ہوگئے ملاقاتوں اور دعوتوں کا سلسلہ عروج پر پہنچ گیا تبدیلی کیلئے سرگرم گروپ کا دعویٰ ہے کہ اگلے مہینے بلوچستان میں تبدیلی آکر رہے گی جبکہ وزیر اعلی جام کمال کے قریبی حلقوں کا کہنا ہے جمہوریت میں ہر کسی کو کوشش کرنے کا حق ہے لوگوں کو اپنا شوق پورا کرنے دیں ماضی کی طرح اس بار بھی انکو ناکامی کا سامنا کرنا پڑے گا تفصیلات کے مطابق بلوچستان میں تبدیلی کیلئے ایک بار پھر بلوچستان عوامی پارٹی کے کچھ وزراء اور اراکین اسمبلی سرگرم ہوگئے ہیں اور اس حوالے بلوچستان اسمبلی میں اپوزیشن جماعتوں سے بھی رابطے کیئے گئے ہیں حال میں ہی ایک ہونے والے کھانے کا شہر بھر چرچا ہے جبکہ تبدیلی کیلئے دعوتوں اور ملاقاتوں کا سلسلہ ہنوز جاری ہے جن کو خفیہ رکھا جارہا ہے تبدیلی کیلئے سرگرم گروپ کی قیادت کا دعوی ہے کہ اگلے مہینہ تبدیلی کا ہے جب اس حوالے سے حکومتی حلقوں سے رابطہ کیا گیا تو انکا کہنا تھا کہ جمہوریت ہے سب کو کوشیں کرنے کی ٓازادی ہے تاہم اس بار بھی مخالفین کو منہ کی کھانی پڑے گئی جبکہ حکومتی اتحادیوں سے جب اس حوالے سے بات کی گئی تو انکا کہنا تھا کہ نو کمنٹس یہ بلوچستان عوامی پارٹی کا اندرونی معاملہ ہے تاہم تبدیلی کیلئے سرگرم گروپ کو اس وقت شدید مایوسی کا سامنا کرنا پڑا جب تحریک انصاف بلوچستان کی پارلیمانی قیادت سے ملاقات کے بعد وزیراعظم عمران خان نے بلوچستان میں جام حکومت کی حمایت جاری کرنے کا اعلان کیا بہرحال بڑوں نے صحیح ہی کہا ہے کہ اپنے ہی گراتے ہیںنیشمن پر بجلیاں دیکھتے ہیں کہ اس بار اونٹ کس کروٹ بیٹھتا ہے یہ تو آنے والا وقت ہی بتائے گا۔


کوئٹہ (آن لائن)وزیراعلی بلوچستان جام کمال خان کی حکومت کیخلاف ایک بار پھر بلوچستان عوامی پارٹی کے وزراء اور اراکین اسمبلی سرگرم ہوگئے ملاقاتوں اور دعوتوں کا سلسلہ عروج پر پہنچ گیا تبدیلی کیلئے سرگرم گروپ کا دعویٰ ہے کہ اگلے مہینے بلوچستان میں تبدیلی آکر رہے گی جبکہ وزیر اعلی جام کمال کے قریبی حلقوں کا کہنا ہے جمہوریت میں ہر

کسی کو کوشش کرنے کا حق ہے لوگوں کو اپنا شوق پورا کرنے دیں ماضی کی طرح اس بار بھی انکو ناکامی کا سامنا کرنا پڑے گا تفصیلات کے مطابق بلوچستان میں تبدیلی کیلئے ایک بار پھر بلوچستان عوامی پارٹی کے کچھ وزراء اور اراکین اسمبلی سرگرم ہوگئے ہیں اور اس حوالے بلوچستان اسمبلی میں اپوزیشن جماعتوں سے بھی رابطے کیئے گئے ہیں حال میں ہی ایک ہونے والے کھانے کا شہر بھر چرچا ہے جبکہ تبدیلی کیلئے دعوتوں اور ملاقاتوں کا سلسلہ ہنوز جاری ہے جن کو خفیہ رکھا جارہا ہے تبدیلی کیلئے سرگرم گروپ کی قیادت کا دعوی ہے کہ اگلے مہینہ تبدیلی کا ہے جب اس حوالے سے حکومتی حلقوں سے رابطہ کیا گیا تو انکا کہنا تھا کہ جمہوریت ہے سب کو کوشیں کرنے کی ٓازادی ہے تاہم اس بار بھی مخالفین کو منہ کی کھانی پڑے گئی جبکہ حکومتی اتحادیوں سے جب اس حوالے سے بات کی گئی تو انکا کہنا تھا کہ نو کمنٹس یہ بلوچستان عوامی پارٹی کا اندرونی معاملہ ہے تاہم تبدیلی کیلئے سرگرم گروپ کو اس وقت شدید مایوسی کا سامنا کرنا پڑا جب تحریک انصاف بلوچستان کی

پارلیمانی قیادت سے ملاقات کے بعد وزیراعظم عمران خان نے بلوچستان میں جام حکومت کی حمایت جاری کرنے کا اعلان کیا بہرحال بڑوں نے صحیح ہی کہا ہے کہ اپنے ہی گراتے ہیںنیشمن پر بجلیاں دیکھتے ہیں کہ اس بار اونٹ کس کروٹ بیٹھتا ہے یہ تو آنے والا وقت ہی بتائے گا۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us