بھارتی پولیس مظاہرین پر تشدد، خواتین سے بدسلوکی کی مرتکب قرار


ئی دہلی( آن لائن ) دہلی میں ہونے والے مظاہروں میں پولیس پر خواتین کے ساتھ غیر ضروری طاقت کے استعمال کے الزامات سامنے آئے ہیں،بھارتی ٹی وی کے مطابق ناقدین نے کہاکہ مظاہرین کے خلاف پولیس کا کردار جابرانہ رہا ،مظاہروں کے دوران مرنے والوں کے لواحقین کا کہنا تھا کہ ان کی موت پولیس کی گولی سے ہوئی ہے،علی گڑھ کے معروف

مورخ عرفان حبیب کا کہنا تھا کہ پولیس کے مظالم انگریزی راج سے بھی بدتر نظر آئیانھوں نے کہا کہ انگریزوں کے دور میں بھی پولیس کیمپس میں داخل ہونے سے باز رہی تھی لیکن حال ہی میں پولیس نے کیمپس میں داخل ہو کر جبرو ظلم کیا ہے۔میڈیا میں ا?نے والے ویڈیوز میں دیکھا جا سکتا ہے کہ کس طرح پولیس نے گھروں میں گھس کر خواتین کو ہراساں کیا ہے۔پولیس پر طنز کرتے ہوئے کئی سوشل میڈیا صارفین نے کہا کہ پولیس والے وکیلوں سے پٹ جاتے ہیں لیکن جے این یو کے طلبہ پر لاٹھیاں برسانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑتے۔یہ واقعات پولیس کی کارگردگی، ان کی تربیت اور ان سے منسلک چند دیگر امور پر سوالات اٹھاتے ہیں۔ ان سوالات میں پولیس کی جوابدہی اور ان کے کام کرنے کے طریقے پر مبینہ سیاسی اثرات بھی شامل ہیں۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us