سابق برطانوی حسینہ فیصلہ سن کرعدالت میں روپڑیں جرم کیا تھا، 21 سالہ حسینہ کو کیا سزا سنائی گئی


ندن(ویب ڈیسک )کم عمری میں برطانیہ کے شہرلیورپول سے مقابلہ حسن جیتنے والی سابق دوشیزہ کوشدت پسندتنظیم داعش کی مالی مددکرنے اوراس تنظیم کے جنگجوسے شادی رچانے کے الزام میں جیل بھیج دیاگیا۔سابق 21سالہ حسینہ امانی نور کوبرطانوی پولیس نے گرفتاری کے بعد دوہفتے قبل عدالت میں پیش کیاتھااورگزشتہ ہفتے ان پرداعش جنگجوسے

شادی کرنے اورشدت پسندتنظیم کومالی معاونت فراہم کرنے جیسے الزامات کی فردجرم عائدکی گئی تھی۔ان پرالزام تھاکہ انہوں نے اپنی 20 ویں سالگرہ کے دن داعش کے ایک جنگجو سے آن لائن شادی کی، جس سے امانی نور کے کچھ عرصہ قبل ہی تعلقات استوار ہوئے تھے۔ان پر الزام تھا کہ انہوں نے داعش کے جنگجو ’حکیم مائی لو‘ نامی شخص سے امانی نور نے میسیجنگ ایپلی کیشن ’ٹیلی گرام‘ پر شادی کی تھی، برطانوی خاتون اور داعش جنگجو کا رابطہ بھی انٹرنیٹ پر ہوا تھا اور دونوں نے کبھی بھی ملاقات نہیں کی تھی، تاہم انٹرنیٹ پر تعلقات استوار ہونے کے بعد دونوں نے شادی کی۔ان پر یہ الزام بھی تھا کہ انہوں نے داعش کو 35 پاؤنڈ یعنی پاکستانی 7 ہزار روپے سے زائد کی مالی معاونت بھی فراہم کی، تاہم انہوں نے اس الزام سے انکار کیا تھا اور کہا تھا کہ انہوں نے داعش کی مالی معاونت نہیں کی بلکہ انہوں نے خانہ جنگی کے شکار ملک شام میں بچوں اور خواتین کے لیے خوراک خریدنے کے لیے پیسے فراہم کیے۔گزشتہ ہفتے برطانوی عدالت کو امانی نور کیس میں آگاہی دی گئی تھی کہ پولیس نے امانی نور کے گھر سے ترکی کا ایئر ٹکٹ بھی برآمد کیا جس کے ذریعے امانی نور ترکی کے راستے شام جاکر داعش میں شمولیت کا ارادہ رکھتی تھیں۔تاہم

امانی نور نے عدالت کو بتایا تھا کہ ان کا داعش میں شمولیت کا کوئی ارادہ نہیں تھا، تاہم وہ اپنے شوہر کے پاس جانا چاہتی تھیں۔امانی نور نے عدالت کو یہ بھی بتایا تھا کہ انہوں نے اپنے سابق بوائے فرینڈ لور پول فٹ بال کلب کے کھلاڑی کی جانب سے دھوکے کے بعد مذہب کو جاننے کا ارادہ کیا اور اسی لیے ہی انہوں نے داعش کے جنگجو سے آن لائن شادی کی تھی۔تاہم اب عدالت نے انہیں داعش کی مالی مدد کرنے کے الزام میں جیل بھیج دیا۔برطانوی نشریاتی ادارے ’بی بی سی‘ کے مطابق عدالت نے جرم ثابت ہونے پر 21 سالہ امانی نور کو 18 ماہ کے لیے جیل بھیج دیا۔عدالت نے امانی نور کو داعش کو مالی مدد فراہم کرنے کے لیے اکسانے والی برطانوی خاتون 28 سالہ وکٹوریا ویبسٹر کو بھی 17 ماہ کے لیے قید کی سزا سنائی۔وکٹوریا ویبسٹر پر الزام تھا کہ انہوں نے ہی امانی نور کو داعش کو مالی مدد دینے کے لیے اکسایا اور خود امانی نور نے بھی عدالت کو بتایا تھا کہ انہوں نے برطانوی خاتون کے کہنے کے بعد ہی رقم دی تھی، تاہم انہوں نے دعویٰ کیا تھا کہ انہوں نے شام میں بچوں اور خواتین کی فلاح و بہبود کے لیے رقم دی تھی۔عدالت کی جانب سے شدت پسند تنظیم کو مالی معاونت فراہم کرنے کے الزام میں سزا سنائے جانے کے بعد امانی نور اور ورکٹوریا ویبسٹر جذباتی ہوگئیں اور انہوں نے عدالت میں رونا شروع کردیا۔خیال رہے کہ امانی نور 18 سال کی عمر میں ’مس ٹین لور پول‘ منتخب ہوئی تھیں اور ان کے تعلقات فٹ بالر شی اوگو سے بھی رہے ہیں۔امانی نور کے فٹ بالر کے ساتھ تعلقات ’مس ٹین‘ منتخب ہونے سے قبل ہی تھے اور یہ اعزاز حاصل کرنے کے بعد دونوں کے تعلقات خراب ہونا شروع ہوئے جس کے بعد انہوں نے 20 سال کی عمر میں داعش کے جنگجو سے آن لائن شادی کرلی تھی۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us