پرویز مشرف کے خلاف مقدمہ بدنیتی اور شخصی انتقام پر مبنی تھا، بیرسٹر علی ظفر


سلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) سینئر قانونی ماہر اور تجزیہ کار بیرسٹرعلی ظفر کا کہناہے کہ سابق صدر پرویزمشرف کے خلاف غداری کا مقدمہ نہیں بنتا ۔ انھوںنے کہا کہ 31جولائی 2009کو سابق چیف جسٹس افتخار چودھری نے رولنگ دی کہ آئین معطل کرنے پر سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف کے خلاف غداری کا مقدمہ دائر کیا جائے لیکن آئین میں اس کی

گنجائش نہیں تھی۔ چنانچہ 2010میں آئین میں اس حوالے سے ترمیم کی گئی۔ لیکن آئین کا آرٹیکل 12یہ کہتا ہے کہ جب آئین میں کوئی نئی ترمیم کی جائے تو اس کا اطلاق ماضی کے واقعات پر نہیں ہوتا ۔ یہ مقدمہ ایک شخص کو ہدف بنانے کےلئے تھا اور اس کے پیچھے بدنیتی شامل تھی۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us