خصوصی عدالت کا پرویز مشرف سے متعلق خوفناک فیصلہ،شدید ردعمل، حکومت نے ہنگامی طور پر بڑاقدم اٹھالیا


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)سینئر تجزیہ کار عارف حمید بھٹی نے کہا ہے کہ تفصیلی فیصلہ گزشتہ روز سے بھی زیادہ خوفناک ہے۔ تفصیل کے مطابق نجی ٹی وی چینل پر پرویزمشرف کے سزائے موت پر تفصیلی فیصلے پر گفتگو کرتے ہوئے عارف حمید بھٹی کا کہنا ہے کہ تفصیلی فیصلہ گزشتہ روز سے بھی بہت زیادہ خوفناک ہے۔ ججز نے پرویز مشرف کے انتقال

کر جانے پر تین دن تک ڈی چوک میں لٹکانے کا فیصلہ بہت خوفناک ہے تاہم ان کا کہنا ہے کہ اس پر ردعمل بھی بہت شدید ہوگا۔انہوں نے بتایا کہ وزات داخلہ کا نمائندہ فیصلے کی کاپی کے کر جا چکا ہے اور حکومت نے قانونی ماہرین کو فیصلہ پر مشاورت کیلئے طلب کر لیا ہے۔یاد رہے کچھ دیر قبل خصوصی عدالت نے پرویز مشرف کے خلاف سنگین غداری کیس کا تفصیلی فیصلہ جاری کر دیا ہے۔سنگین غداری کی سماعت کرنے والے بینچ کے سربراہ جسٹس وقار احمد نے تفصیلی فیصلے میں لکھا کہ مشرف فوت ہوگئے تو ان کی لاش تین دن ڈی چوک پر لٹکائی جائے۔خصوصی عدالت کے رکن جسٹس وقار احمد سیٹھ اور جسٹس شاہد کریم نے فیصلہ سے اتفاق کیا جب کہ بینچ کے رکن جسٹس نذر اکبر نے فیصلے پر اختلافی نوٹ تحریر کیا ہے۔جسٹس شاہد کریم نے جسٹس وقار احمد سیٹھ کے پورے فیصلے سے اتفاق کیا لیکن ایک جملے(لاش ڈی چوک میں لٹکائی جائے) سے اختلاف کیا ہے۔جسٹس وقار احمد

سیٹھ نے اپنے فیصلے میں لکھا کہ یہ اپنی نوعیت کا مثالی کیس ہے، اس کو مثالی بنایا جائے۔جسٹس شاہد کریم نے جسٹس وقار سیٹھ نے مثالی سزا کے متعلق پیراگراف سے اختلاف کرتے ہوئے لکھا کہ مثالی سزا کی قانون میں کوئی گنجائش نہیں یہ غیرآئینی ہوگی۔تفصیلی فیصلے کے مطابق پرویزمشرف نے 3 نومبر 2007 کو ایمرجنسی لگائی اور سپریم کورٹ کے 15 ججوں کو برطرف کیا گیا۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us