پرویز مشرف کی لاش کو ڈی چوک پر لٹکانے کا فیصلہ، خوفناک ردعمل کاخدشہ، حکومت نے ہنگامی اقدام اُٹھا لیا، کیا ہونے والا ہے


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک )پرویز مشرف کی لاش کو ڈی چوک پر لٹکانے کا فیصلہ، خوفناک ردعمل کاخدشہ، حکومت نے ہنگامی اقدام اُٹھا لیا۔۔۔۔ سئنیر تجزیہ کار عارف حمید بھٹی نے کہا ہے کہ تفصیلی فیصلہ گزشتہ روز سے بھی زیادہ خوفناک ہے۔ تفصیل کے مطابق نجی ٹی وی چینل پر پرویزمشرف کے سزائے موت پر تفصیلی فیصلے پر گفتگو کرتے ہوئے

عارف حمید بھٹی کا کہنا ہے کہ تفصیلی فیصلہ گزشتہ روز سے بھی بہت زیادہ خوفناک ہے۔ ججز نے پرویز مشرف کے انتقال کر جانے پر تین دن تک ڈی چوک میں لٹکانے کا فیصلہ بہت خوفناک ہے تاہم ان کا کہنا ہے کہ اس پر ردعمل بھی بہت شدید ہوگا۔ انہوں نے بتایا کہ وزات داخلہ کا نمائندہ فیصلے کی کاپی کے کر جا چکا ہے اور حکومت نے ہنگامی طور پر قانونی ماہرین کو فیصلہ پر مشاورت کیلئے طلب کر لیا ہے۔
یاد رہے کچھ دیر قبل خصوصی عدالت نے پرویز مشرف کے خلاف سنگین غداری کیس کا تفصیلی فیصلہ جاری کر دیا ہے۔ پرویز مشرف کے وکیل تفصیلی فیصلہ کی کاپی لے کر عدالت سے روانہ ہو گئے ہیں۔ وزارت داخلہ کے نمائندوں کو بھی فیصلے کی کاپی فراہم کر دی گئی ہے۔تفصیلی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ دو ججز پرویز مشرف کو سزا دینے کے حق میں ہیں جب کہ سندھ ہائیکورٹ کے جج نے اس سے اختلاف کیا۔جسٹس وقار احمد سیٹھ اور

جسٹس شاہد کریم نے سزائے موت کا حکم دیا۔ جسٹس نذر اکبر نے فیصلے سے اختلاف کیا۔جسٹس نذر اکبر نے سنگین غداری کیس میں پرویز مشرف کو بری کر دیا۔جسٹس نذا اکبر نے اپنے اختلافی نوٹ میں کہا کہ استغاثہ اپنا کیس ثابت کرنے میں ناکام رہا۔پرویز مشرف کے خلاف سنگین غداری کا فیصلہ 169 صفحات پر مشتمل ہے جس میں پرویز مشرف کو غداری کا مرتکب قرار دے دیا گیا ہے۔ تاہم سنیئر تجزیہ کار عارف حمید بھٹی نے کہا ہے کہ اس فیصلے پر ردعمل شدید ہوگا۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us