وزیراعظم کا دورہ ملائیشیامنسوخ، عمران خان نے سعودی عرب کے دبائو میں آکر یہ فیصلہ کیوں کیا، جانئے تفصیلات


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)وزیراعظم عمران خان سعودی عرب کے سامنے جھک گئے۔وزیراعظم عمران خان نے سعودی عرب کے دباؤ پر ملائیشیا کا اہم سرکاری دورہ منسوخ کر دیا ہے۔ذرائع کے مطابق سعودی عرب کو کوالالمپور سربراہ اجلاس میں شرکت کی دعوت نہیں دی گئی،ماہرین کے مطابق سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کی قیادت کو یہ خدشہ ہے کہ کوا لالمپور سربراہ اجلاس کہیں او آئی سی کی جگہ نہ لے لے۔جس پر در اصل سعودی

Advertisement

عرب کا بہت زیادہ اثرورسوخ ہے۔ماہرین کا کہنا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کا فیصلہ سعودی عرب اور یو اے ای کے لیے باعث اطمینان ہے لیکن ملائیشیا کے لیے باعثِ تشویش ہو گا۔ذرائع کے مطابق تاحال سرکاری سطح پر وزیراعظم عمران خان کے دورے کی منسوخی کا اعلان نہیں کیا گیا۔خیال رہے کہ وزیراعظم عمران خان نے دورہ سعودی عرب کے بعد دورہ ملائشییاء کیلئے روانہ ہونا تھا۔تاہم گذشتہ روز وزیراعظم عمران خان نے اپنا دورہ ملائیشیاء منسوخ کردیا ۔ ملائیشیا میں 18 سے 20 دسمبر تک منعقد ہونے والے کوالالمپور (سمٹ) اجلاس میں وزیراعظم نے شرکت کرنی تھی۔ کوالالمپور سمٹ ملائیشیا کے وزیراعظم ڈاکٹر مہاتیر محمد کی سوچ ہے۔ اس اجلاس میں ترک صدر رجب طیب اردوان، قطری امیر شیخ تمیم بن حماد الثانی اور ایران کے صدر حسن روحانی بھی شرکت کریں گے۔اس کے علاوہ انڈونیشیا کے صدر جوکو ویدودو کے اجلاس میں شرکت کے بھی امکانات ہیں۔

واضح رہے گزشتہ روز وزیر اعظم عمران خان دونوں برادر اسلامی ممالک پاکستان اور سعودی عرب کے تعلقات مضبوط بنانے کے لیے ایک روزہ دورے پر سعودی عرب پہنچے تھے۔ عمران خان اپنے دورے کے پہلے مرحلے میں مدینہ منورہ پہنچے، جہاں رائل ٹرمینل پر مدینہ کے ڈپٹی گورنر وحیب السہلی اور جدہ میں پاکستان کے قونصل جنرل خالد مجید نے ان کا استقبال کیا۔اس موقع پر سعودی پروٹوکول کے حکام اور پاکستانی قونصلیٹ کے افسران بھی استقبال کے لیے موجود تھے جبکہ سیکریٹری خارجہ سہیل محمود بھی ٹرمینل پر آئے تھے۔ وزیراعظم عمران خان روضہ رسول ؐ پر حاضری دی اور نوافل کی ادائیگی کی، جس کے بعد وہ سرکاری مصروفیات کے لیے دارالحکومت ریاض روانہ ہوئے۔ بعدازاں وزیر اعظم عمران خان نے ورہ سعودی عرب کے دوران ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے ریاض میں ملاقات کی۔وزیر اعظم آفس سے جاری بیان کے مطابق ملاقات میں پاک، سعودیہ دو طرفہ تعلقات اور خطے کی مجموعی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

 



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


Copyright © 2017 https://pakistanlivenews.com All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Disclaimer | Contact Us