جمعرات‬‮   15   ‬‮نومبر‬‮   2018
           

چئیرمین نیب صاحب! ہمارے کس کام کے ہیں آپ؟؟اپنا کوئی بندو بست کر لیں۔۔جسٹس (ر)جاویداقبال کو یہ دھمکی کس نے اور کیوں دی؟؟دھماکے دار ویڈیو


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) حکومت کی جانب سے نیب کورٹ میں پراسکیوٹر جنرل کی نامزدگی کےلئے چئیرمین نیب پر دبائو ڈالے جانے کا انکشاف ہو اہے۔ نجی ٹی وی چینل اے آر وائی پر معروف صحافی اور تجزیہ کار صابر شاکر نے بتایا ہے کہ حکومتی شخصیت نے چند نام پراسیکیوٹر جنرل کےلئے چئیرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال کو دیے اور کہا کہ ان

میں سے کسی کو پراسیکیوٹر جنرل بنائیں۔ جس پر ایک ایک کرکے چئیرمین نیب نے سارے نام مسترد کردیے۔اور کہا کہ یہ لوگ کورٹ میں کیا کریں گے ؟ ان سب کو میںاچھی طرح جانتا ہوں۔اگر ان کو ہی رکھنا تھا تو پھر ریفرنسز دائر کرنے کی کیا ضرورت تھی؟ اس کے جواب میں حکومتی شخصیت نے کہا کہ پھر آپ کو لانے کا کیا فائدہ؟ آپ کوئی اپنا بندو بست کرلیں۔ جس پر چئیرمین نیب نے جواب دیا کہ میری تقرری آئین کے تحت ہوئی ہے۔ مجھے اگر آپ ہٹانا چاہتے ہیں تو سپریم جوڈیشل کونسل کو خط لکھیں۔ لیکن میں یہ کام ہر گز نہیں کروں گا۔ صابر شاکر نے مزید بتایا کہ اس کے بعد چئیرمین نیب نےپراسکیوٹر جنرل کے لئے پانچ نام دیے جن میں سے چار ہائی کورٹس کے ریٹائرڈ جج صاحبان ہیں جبکہ ایک سپریم کورٹ کے سابق سینئر ایڈووکیٹ ہیں۔ جو کہ غالباً شاہ خاور ایڈووکیٹ ہیں۔ اور کہا کہ ان پانچوںمیں سے کسی ایک کو پراسیکیوٹر جنرل بنا دیاجائے۔ اس پر اینکر عارف حمید بھٹی کا کہنا تھا کہ ان میں سے کوئی ایک بھی پراسیکیوٹر جنرل بن گیا تو گاڈ فادر اور سسلین مافیا کو سزائوں سے کوئی نہیں بچا سکتا ۔

اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ تر ین
دلچسپ و عجیب
روحانی دنیا
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ پاکستان لائیو نیوز محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Pakistan Live News. All Rights Reserved
   About Us    |    Privacy policy    |    Contact Us