اتوار‬‮   23   ستمبر‬‮   2018
           

وزیر اعظم اور وزیر خارجہ امریکہ میں صحافیوں کے سوالوں پر کس قسم کے مذاق کرتے رہے؟؟امریکی خاتون صحافی نے بے تکے جوابات پر تنگ آکر وزیر اعظم کو کیا ڈالا؟؟انتہائی حیران کن رپورٹ آگئی


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے دورے امریکہ میں انٹرویوز کے دوران سوالوں کے جواب دیتے ہوئے خوفناک گھبراہٹ اور گڑ بڑ کا انکشاف ہو اہے۔ نجی ٹی وی چینل سمانیوز کی رپورٹ کے مطابق شاہد خاقان عباسی نے امریکہ میں اہم شخصیات سے 24ملاقاتیں کی اور ملکی اور غیر ملکی میڈیا کو 27انٹرویوز دیے ۔

رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے کہ انٹرویوز کے دوران سوالوں کے ایسے جوابات دیے گئے کہ غیر ملکی تو غیر ملکی خود پاکستانی صحافی بھی اپنا سرپکڑ کر بیٹھ گئے۔اس گڑ بڑ گھٹالے کا آغاز معروف امریکی صحافی کرسٹیانا مینپر کو دیے گئے انٹرویو سے ہوا۔ جس میں شاہد خاقان عباسی ان کے پوچھے گئے کئی سوالوں پر اس قدر گھبرا گئے کہ گھما پھرا کر ایک ہی جواب الفاظ بد ل بدل کر دیتے رہے۔مثلا ان کا کہنا تھا “جیسا کہ میں نے کہا کہ اختلاف رائے موجود ہے۔ ہم دہشتگردی کے خلاف جنگ میں پارٹنرز ہیں۔”۔ ایک اور سوال کے جواب میں پھر انھوں نے کہا “رائے اور سوچ میں اختلافات موجو د ہیں لیکن ہمارا اس جنگ میں ایک کردار ہے”۔ ایک تیسرے سوال کے جواب میں پھر انھوں نے کہا” کل میں نے نائب صدر سے ملاقات کی ہے۔اور انھیں سمجھایا ہے کہ ہم شدت پسندی کے خلاف جنگ میں آپ کے ساتھ ہیں”۔ اس پر جھنجھلاتی ہوئی خاتون صحافی کے منہ سے نکل آیا۔ “مجھے تو آپ کی ایک بات کی بھی سمجھ نہیں آرہی”۔ اس سبکی آمیز واقعے کے بعد اگلا میدان اس وقت سجا جب وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور وزیر خارجہ خواجہ آصف پاکستانیوں صحافیوںکے سامنے کی گئی پریس کانفرنس میں شریک تھے۔یہاں پر سوالات تو اردو میں تھے لیکن سوالات کچھ زیادہ سخت تھے۔ جس پر وزیرا عظم اور وزیرخارجہ کو مذاق اور چٹکلوں کا سہارا لینا پڑا۔ ایک پاکستانی صحافی نے سوال کیا کہ میرے خیال سے آپ کو اپنی تقریر میں کلبھوشن یادیو کا نام لینا چاہیے تھا۔وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی ملکی داخلی سلامتی سے جڑے اس اہم ترین سوال کو بھی مذاق میں ٹال گئے اور کہنے لگے”اچھا ؟ نام لینا چاہیے تھا؟؟ چلو یار اگلی تقریر میں لے لوں گا نام حوصلہ رکھیں”۔ ایک اور سوال کے جواب میں انھوں نے الٹا صحافی کو جھاڑ دیا اور کہنے لگے ” مجھے تو تمھارا تجزیہ بڑا عجیب سے لگا ہے۔”اس پر خواجہ آصف نے بھی ان کا بھرپور ساتھ دیتے ہوئے پنجابی میں جملہ گھڑا ۔۔”یار توں پیلاں جا کے پڑھ تاں لے۔اے نوبت آگئی اے )یار تم پہلے جا کر اپنی تعلیم مکمل کرو ،اب یہ نوبت آگئی ہے(۔ایک صحافی نے سوال کیا کہ “کیا غریب ملک کو یہ زیب دیتا ہے کہ اتنے اخراجات کیے جائیں؟۔ “اس پر وزیر اعظم نے جواب دیا “آپ سوال کر رہے ہیں تو پھر جواب بھی آپ ہی دے دیں”۔ گویا کہ یہ دورہ ایسے ہی گڑبڑ والے جوابات اور چٹکلوں پر مبنی انٹرویوز سے مزین رہا۔ان انٹرویوز میں کیاہوا؟؟اس ویڈیو میں دیکھیے

اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ تر ین
دلچسپ و عجیب
روحانی دنیا
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ پاکستان لائیو نیوز محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Pakistan Live News. All Rights Reserved
   About Us    |    Privacy policy    |    Contact Us