منگل‬‮   22   مئی‬‮   2018
           

شادی کے 35سال بعد ایک 9بچوں کا باپ چیک اپ کےلئے ڈاکٹر کے پاس پہنچا تو ڈاکٹر نے اسے بتایا کہ وہ تو بانجھ تھا۔۔۔عرب اخبار کی رپورٹ نے تہلکہ مچا دیا


دبئی سٹی (مانیٹرنگ ڈیسک) کوئی بھی انسان اپنی تعلیم مکمل کرنے ، اچھی نوکری حاصل کرنے ، کاروبار سیٹ کرنے اور شادی کرنےکے بعد اپنی ساری توجہ اور خوشیاں کسی کے نام کر دیتا ہے تو وہ اس کی اولاد ہوتی ہے۔ جس کی ضرورتوں ، خواہشات، تکالیف اور خوشیوں کی انسان کواپنی ذات سے بھی بڑھ کر پرواہ ہوتی ہے لیکن اگر کسی انسان پر یہ

انکشاف ہو جائے کہ جس اولاد کےلئے وہ ساری زندگی اپنی جان ہلکان کرتا رہا وہ اس کی اپنی ہے ہی نہیں تو یہ منظر کسی قیامت سے کم نہیں ہوتا ہوگا ۔ متحدہ عرب امارات کے شہر دبئی سٹی کے رہائشی ایک شخص کے ساتھ بھی ایسا ہی ہوا۔خلیج ٹائمز نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ ایک یہ شخص اپنے جسی جنسی مسئلے کی وجہ سے ڈاکٹر کے پاس گیا ۔ اس کی شادی کو 35سال ہو چکے تھے اور اس کے 9بچے تھے۔ ڈاکٹر نے اس کا تفصیلی معائنہ کرنے کے بعد اسے بتایاکہ وہ کسی 50سال پرانی رسولی کی وجہ سے اولاد پیدا کرنے کی صلاحیت سے محروم ہوچکا تھا ۔ اس پر اس شخص پر قیامت ٹوٹ پڑی اور وہ سوچنے لگ گیا کہ اگر ایسا تو وہ 9بچے کس کے تھے جنھیں وہ اپنی اولاد سمجھ کر پالتا پوستا رہا۔ اس نے اپنا اور اپنے بچوں کا ڈی این اے ٹیسٹ کروایا تو اسے معلوم ہوا کہ کوئی ایک بھی بچہ اس کا اپنا نہیں تھا بلکہ اس کی بیوی اسے 35سال تک دھوکا دے کر کسی اور مرد کے بچے پیدا کرتی رہی۔اب وہ شخص اپنی بیوی کو طلاق دینے اور ان 9بچوں سے لا تعلقی ظاہر کرنے کے لئے عدالت جانے کا ارادہ رکھتاہے۔

اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ تر ین
دلچسپ و عجیب
روحانی دنیا
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ پاکستان لائیو نیوز محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Pakistan Live News. All Rights Reserved
   About Us    |    Privacy policy    |    Contact Us