ہفتہ‬‮   21   اپریل‬‮   2018
           

مجھے لاہور جاناتھا،،میری ساتھ والی نشست پر بیٹھ ہوئےایک لڑکے نے میرے سامنے ہی یہ شرمناک حرکت کرنی شروع کردی۔۔خاتون نے ایسی بات کہہ ڈالی کہ معاشرے کا انتہائی شرمناک روپ سامنے آگیا


اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک ) اپنی ناگزیر ضروریات کی بنا پر گھر کی چار دیواری سے باہر نکلنے والی خواتین کو بسا اوقات مشکل صورتحال کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ سب سے زیادہ تشویشناک رجحان انھیں جنسی ہراساں کیے جانے کا ہے او را س کا شکار کم و بیش ہردوسری خاتون ہوجاتی ہے ۔انسانی حقوق کی ایوارڈ یافتہ کارکن عظمیٰ یعقوب نے بھی اپنے

ساتھ پیش آئے ایسے ہی ایک واقعے کا ذکر کیاگیاہے۔ کہتی ہیں کہ انھیں کسی اجلاس میں شرکت کےلئے لاہور جانا تھا جس کے لئےا نھوںنے ڈائیوو کا انتخاب کیا ۔ انھوںنے بتایا کہ ان کی برابرکی سیٹ پر بیٹھا ہواایک لڑکا انھیں کھا جانے والی نظروں سے گھو رہا تھا۔ یہاں تک کہ انھوں نے اسے نظرانداز کیا لیکن اس کا کوئی بھی فائدہ نہ ہوا۔پھر اس نے موبائل فون نکال کریہ تاثر دیا کہ وہ کسی سے بات کررہا ہے ۔ جس زبان میں وہ بات کررہا تھا میں سمجھ رہی تھی۔ وہ میرے بارے میں انتہائی بے ہودہ اورشرمناک باتیں کر رہا تھا۔جب یہ سلسلہ بندہواتو اس نے خود لذتی سے گری ہوئی حرکت کا ارتکاب کرنا شروع کر دیا۔ عظمیٰ یعقوب کا کہنا ہے کہ اس سے قبل بھی انھیں باہر جاتے ہوئے ایسے مسائل کاسامنا رہا ہے۔

اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ تر ین
دلچسپ و عجیب
روحانی دنیا
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ پاکستان لائیو نیوز محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Pakistan Live News. All Rights Reserved
   About Us    |    Privacy policy    |    Contact Us