منگل‬‮   22   مئی‬‮   2018
           

خیبر پختونخوا میںایک پرندے کے مرنے پر بھی ٹوئٹ کرنے والے بلاول بھٹو کو اپنی ناک کی نیچے ہونے والےکون سی شرمناک واقعات نظر نہیں آرہے؟؟پی ٹی آئی رہنما کھل کر میدان میں آگئے


کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی رہنماء وسابق وزیراعلیٰ سندھ لیاقت علی جتوئی نے جتوئی ہائوس کراچی پر پارٹی کے عہدیداروں سے ملاقات کے دوران اپنی گفتگو میں کہا کہ سندھ کو آصف زرداری نے یرغمال بنایا ہوا تھا مگر اب عوام میں شعور آرہا ہے اور وہ ان بتوں کو گرانے کے لیے تحریک انصاف میں تیزی سے شامل ہورہے ہیں

سندھ کے وسائل کو لوٹ کر بلاول ہائوس کی آرائشوں پر خرچ کرنے والی پیپلزپارٹی کے دور میں لوگوں کی عزتیں بھی محفوظ نہیں رہی سندھ میں جنسی زیادتی کے بڑھتے ہوئے واقعات پر سندھ حکومت کی خاموشی قابل مذمت ہے بلاول زرداری کو کے پی کے میں اگر پرندہ بھی مرجائے تو اس پر ٹوئٹ کردیتے ہیں مگر اپنی حکومت والے صوبے میں عصمت دری کے واقعات نظر نہیں آتے معصوم بچیوں اور بچوں کے ساتھ آئے روز زیادتی کے واقعات رونما ہورہے ہیں مگر سائیں سرکار نے ابھی تک کسی بھی واقعے کے ملزمان کو گرفتار نہیں کیا ، تحریک انصاف متاثرہ خاندانوں کے ساتھ ہے اور انصاف کے حصول کے لیے ہر فورم پر آواز بلند کریں گے سندھ حکومت اس وقت لوگوں کی خرید و فروخت میں مصروف ہے انہیں عوامی مسائل سے کوئی سروکار نہیں پیپلزپارٹی حکومت نے اقتدار کے دور میں عوام کی خدمت کی بجاء اپنے حواریوں اور اپنے اکائونٹس کی خدمت کی ہے آصف زرداری کے ہوتے ہوئے سندھ کبھی بھی خوشحال نہیں ہوسکتا اس لیے سندھ کی عوام ابھی بھی سوچیں کہ جس زرداری نے دس سالوں میں سندھ کے لوگوں کو کچھ نہیں دیا وہ ا ب کیا دے گا بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے نام پر مائوں بہنوں پر لاٹھیاں برسائی جارہی ہیں جوکہ سندھ کی روایات پر حملہ ہے سندھ حکومت کے ربڑ اسٹمپ وزیراعلیٰ مراد علی شاہ عوام کی خدمت کی بجاء آصف ، بلاول زرداری کی خدمت میں مصروف ہیں کراچی کی سڑکوں پر گھومنے کی بجاء وزیراعلیٰ اندرون سندھ بڑھتی ہوئی بدامنی کے واقعات پر بھی پہنچیں ، تحریک انصاف زیادتی کے واقعات کے خلاف عدالتوں اور ایوانوں میں اپنا آواز بلند کرے

اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
تازہ تر ین
دلچسپ و عجیب
روحانی دنیا
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ پاکستان لائیو نیوز محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Pakistan Live News. All Rights Reserved
   About Us    |    Privacy policy    |    Contact Us